کنیسٹ کے ڈپٹی سپیکر کا سابق وزیر اعظم ایہود باراک کو پھانسی دینے کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسرائیلی معاشرے میں داخلی سیاسی بحران کی شدت اور سیاسی بیان بازی میں تلخ لہجے کا استعمال معمول کی بات بن چکی ہے۔ ارکان کنیسٹ اب تنقید کے بعد سیاسی مخالفین کے خلاف دھمکیوں پر اتر آئے ہیں۔ کنیسٹ (پارلیمنٹ) کے ڈپٹی اسپیکر نیسیم فاتوری نے سابق وزیر اعظم ایہود باراک کو پھانسی دے کر سزائے موت دینے کا مطالبہ کیا۔

رائے عامہ کے ایک جائزے سے پتہ چلتا ہے کہ اسرائیلی معاشرہ الجھن کا شکار ہے اور اس کے ساتھ جو کچھ ہو رہا ہے اس کے بارے میں متضاد فیصلے لیتا ہے۔

سروے میں 50 فیصد شہریوں نے کہا کہ حکومت کی پالیسی ان کی ذاتی زندگیوں کو براہ راست نقصان پہنچاتی ہے، نصف یہودی شہری اب بھی بنجمن نیتن یاہو کی قیادت میں دائیں بازو کی حکومت کی حمایت کرتے ہیں۔

رائے عامہ سے ظاہر ہوتا ہے کہ مؤخر الذکر جس نے نظام حکومت کو تبدیل کرنے اور عدلیہ کو کمزور کرنے کے منصوبے کی وجہ سے بڑی تعداد میں ووٹ کھو دیے تھے، اپنی کھوئی ہوئی طاقت کو دوبارہ حاصل کرنے لگے ہیں۔ آج دوبارہ الیکشن ہوتے ہیں تو نیتن یاھو 32 سیٹیں جیت سکتے ہیں۔

رائے عامہ کے تازہ جائزے کی تفصیلات ہفتہ وار جریدے’ "معریب" میں جمعہ کے روز شائع ہوئیں۔ سروے میں اس بات کی نشاندہی کی گئی ہے کہ یہودی اتحاد اور حزب اختلاف کی جماعتیں کنیسٹ میں اپنے اراکین کی تعداد کے لحاظ سے برابر ہیں۔

اگر انتخابات ابھی کرائے جائیں (ہر ایک کے لیے 55 نشستیں ہو سکتی ہیں)۔ البتہ فیصلہ کن کردار ان 10 عرب سیٹوں کو کرنا ہے جو اسرائیل کی عرب کمیونٹی کی نمائندہ ہیں۔ ان میں پانچ کی قیادت منصور عباس کررہےہیں جن کی قیادت میں متحدہ عرب فہرست برائے اسلامی تحریک کر رہی ہے جب کہ پانچ ایمن عودہ اور احمد الطیبی کی قیادت میں "فرنٹ" اور "عرب فار چینج" کےپاس ہوں گی۔

پول سے پتہ چلتا ہے کہ رکن کنیسٹ بینی گینٹز کی قیادت میں "آفیشل کیمپ" پارٹی انتخابات کی صورت میں اسرائیل کی سب سے بڑی پارٹی بننے کے لیے اپنی طاقت اور پوزیشن کو مضبوط کر رہی ہے۔ گذشتہ نومبر میں ہونے والےانتخابات میں اس نے 11 سیٹوں پر کامیابی حاصل کی تھی جب کہ ان کا دعویٰ تھا کہ وہ کنیسٹ میں 31 سیٹیں جیتیں گے۔ یائر لپیڈ کی سربراہی میں یش عتید پارٹی نے 15 نشستیں حاصل کیں۔۔

اس کے برعکس اتحاد میں شامل سفاردک یہودیوں کی شاس پارٹی 9 سے بڑھ کر 10 سیٹوں کی مالک ہوگئی۔ مذہبی اشکنازی یہودیوں کے "متحدہ تورات یہودیت" بلاک نے 7 نشستوں کے ساتھ اپنی طاقت کو برقرار رکھا ایتمار بن گویر کی قیادت میں "اتزمہ یہودیت" پارٹی 4 سے 5 نشستوں تک بڑھ گئی۔

عبرانی میڈیا میں محققین اور ماہرین نے جمعہ کے روز سامنے آنے والے سروے پر رائے دیتے ہوئے اس بات کی تصدیق کی گئی کہ اسرائیلی عسکری قیادت کے خلاف حکومتی اتحاد کے وزراء اور کنیسٹ ارکان کے حملے، عدلیہ کو کمزور کرنے کے منصوبے کے نتائج عوام میں سخت رد عمل ظاہر کررہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں