بغداد میں پبلیسٹی اسکرینوں پر فحش فلمیں چلا دی گئیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ہفتے کے روز عراقی حکام نے بغداد کی سڑکوں پر لگائی گئی پبلیسٹی اسکریوں پر اشتہارات اس وقت بند کردیے جب اسکرینوں پر فحش مواد پرمبنی اشہارات چلنے لگے۔ حکام کا کہنا ہے کہ اسکرینوں پر متنازع اشہارات چلنے کی وجہ ان کے سسٹم کو ہیک کیا جانا ہے۔ ہیکروں نے دارالحکومت کے وسط میں عوام میں فحش مناظر چلا کر یہ ثابت کیا کہ انہوں نے اسکریوں پر اشتہارات کے نظام کو ہیک کیا ہے۔ اس حوالے سے ایک مقامی عہدیدار کو غفلت برتنے پر معطل کردیا گیا ہے۔

سکیورٹی کے ایک ذریعہ نے’اے ایف پی‘کو بتایا کہ" ایک شخص ہفتے کی شام عقبہ بن نافی چوک پر اشتہاری اسکرینوں میں سے ایک کو ہیک کیا گیا تھا۔ ہیک کیے جانے کےبعد اسکرینوں پر دیر تک فحش فلم چلتی رہی۔ اس مواد کو روکنے کے لیے بجلی کی سپلائی بند کرنا پڑی۔

سوشل میڈیا پر اس حوالے سے ویڈیوز پوسٹ کی گئی ہیں۔ تاہم نیوز ایجنسی یہ ثابت نہیں کرسکی کہ آیا سوشل میڈیا پر پوسٹ کردہ غیراخلاقی مواد روڈ پر نصب اسکرینوں پر چلایا گیا تھا یا نہیں۔

سکیورٹی ذرائع نے نشاندہی کی کہ ان "غیر اخلاقی مناظر" نے حکام کو "بغداد میں تمام اشتہاری اسکرینوں کو بند کرنے پر مجبور کیا۔

دوسری طرف وزارت داخلہ نے اتوار کے روز ایک بیان میں کہا تھا کہ اسکرینوں کو ہیک کرنے کے شبے میں ایک مشتبہ شخص کو گرفتار کیا گیا ہے۔

سنہ 2022ء میں عراق نے انٹرنیٹ کے ذریعے فحش ویب سائٹوں تک رسائی روکنے کا اعلان کیا تھا۔ بہت سے ایسے فحش پلیٹ فارمز کی بندش کےباوجود کئی ایسے آن لائن ٹولز موجود ہیں جہاں سے فحش فلموں تک رسائی ممکن ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں