لبنان: عین الحلوہ فلسطینی پناہ گزین کیمپ میں ’اونروا‘ کے اسکول کےقریب دھماکہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

جنوبی لبنان میں عین الحلوہ فلسطینی پناہ گزین کیمپ کے اندر بدھ کی صبح ایک دھماکے کی آواز سنی گئی۔ یہ دھماکہ اقوام متحدہ کی ریلیف اینڈ ورکس ایجنسی ’اونروا‘ کے ایک اسکول کے قریب ہوا۔

لبنانی قومی خبر رساں ایجنسی کے مطابق معلوم ہوا ہے کہ یہ دھماکہ دستی بم کی وجہ سے ہوا جو کیمپ کے اندر فلسطینی پناہ گزینوں کے لیے اقوام متحدہ کی ریلیف اینڈ ورکس ایجنسی ’اونروا‘ سے تعلق رکھنے والے ایک اسکول کے قریب پھٹا، تاہم اس دھماکے کے نتیجے میں کسی ہلاکت یا زخمی کی اطلاع نہیں ملی۔

عین الحلوہ کیمپ سے دھواں اٹھ رہا ہے۔
عین الحلوہ کیمپ سے دھواں اٹھ رہا ہے۔

پرتشدد جھڑپیں

قابل ذکر ہے کہ لبنان کے سب سے بڑے اور گنجان آباد فلسطینی پناہ گزین کیمپوں میں عین الحلوہ سب سے زیادہ آبادی والا کیمپ تصور کیا جاتا ہے۔ اس کیمپ میں جولائی کے اواخر میں تحریک فتح تحریک کے ارکان اور دیگر شدت پسندوں کے درمیان پرتشدد جھڑپیں ہوئیں، جن میں 11 افراد ہلاک اور 40 زخمی ہو گئے تھے۔

یہ جھڑپیں کئی روز جاری رہیں جس کے دوران مسلح گروہوں نے گولہ باری اور درمیانے ہتھیاروں کا استعمال کیا، تاہم کئی روزہ کشیدگی کے بعد کیمپ میں اب حالات پرسکون ہوگئے ہیں۔

اقوام متحدہ کے ساتھ رجسٹرڈ 54,000 سے زیادہ فلسطینی پناہ گزین اس کیمپ میں مقیم ہیں۔ گذشتہ برسوں میں شام کے چھڑنے والی خانہ جنگی کے بعد شام سے مزید فلسطینی اس کیمپ میں آئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں