مصر: نہرسویز میں دوجہازوں کے تصادم کے بعد آبی ٹریفک بحال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

نہر سویز (سویس) میں دوجہازوں کے تصادم کے بعد آبی ٹریفک معمول کے مطابق بحال ہو گیاہے۔نہرسویز اتھارٹی نے بدھ کے روز کہا ہے کہ دو جہازوں کے آپس میں ٹکرانے سے ٹریفک کے بہاؤ میں عارضی طور پر تاخیر ہوئی ہے۔

اتھارٹی کے چیئرمین اسامہ ربیع نے ایک بیان میں کہا کہ مائع قدرتی گیس (ایل این جی) لے جانے والے بی ڈبلیو لیسمز کو تکنیکی خرابی کی وجہ سے اچانک روک دیا گیا تھا جبکہ آئل ٹینکر بوری اس کی طرف بڑھ گیا تھا۔

انھوں نے کہا کہ کینال اتھارٹی نے ٹگ بوٹس کے ذریعے دونوں جہازوں کو ہٹا کر آبی ٹریفک کے لیے راستہ صاف کردیا ہے۔جہاز ٹریکر میرین ٹریفک کے مطابق سنگاپور کے جھنڈے والے بی ڈبلیو لیسمز کو کامیابی کے ساتھ آبی راستے سے باہر لے جایا گیا جبکہ کیمین جزائر کے جھنڈے والا بوری جہاز سویز لنگر گاہ پرلنگرانداز تھا۔

بی ڈبلیو لیسمز کی منتظم کمپنی بی ڈبلیو ایل این جی اے ایس نے ایک بیان میں بتایا کہ جہاز منگل کے روز تقریبا 21:35 (1835 جی ایم ٹی) پر نہر سویز سے جنوب کی طرف گذررہا تھا۔اس کی رفتار کم تھی۔اس لیے تصادم سے جہاز کی آپریشنل صلاحیتوں پر کوئی اثر نہیں پڑا اور جہاز’’ساختی طور پر مستحکم رہتا ہے‘‘۔

بی ڈبلیو لیسمز کو بدھ کی صبح مقامی وقت کے مطابق صبح ساڑھے تین بجے کامیابی کے ساتھ دوبارہ چلا دیا گیا اور اس کا نہر سویزکی گودی پر مزید معائنہ کیا جائے گا۔

نہر سویز اتھارٹی کے چیئرمین کا کہنا تھا کہ ایسا نہیں لگتا کہ کوئی خاص نقصان یا آلودگی ہوئی ہے لیکن بوری کا اسٹیئرنگ فیل ہو گیا ہے جس کی مرمت کی ضرورت ہے مگربوری کی منتظم کمپنی ٹی ایم ایس ٹینکرنے تبصرہ کرنے کی درخواستوں کا جواب نہیں دیا۔

واضح رہے کہ نہرسویز دنیا کی مصروف ترین آبی گذرگاہوں میں سے ایک ہے اور یورپ اور ایشیا کے درمیان جہازرانی کا سب سے مختصر روٹ ہے۔دنیا کی تقریبا 12 فی صد بحری تجارت اس نہر کے ذریعے ہوتی ہے۔

سنہ 2021 میں تیزہواؤں کے دوران میں ایک بڑا کنٹینر جہاز ایورگیون اس کے کنارے جام ہو گیا تھا جس کی وجہ سے دونوں سمتوں میں آبی ٹریفک چھے دن تک معطل رہا تھااور اس سے عالمی تجارت متاثر ہوئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں