اردن کے ولی عہد مقتول دلہا کے گھر پہنچ گئے، سوگوارخاندان سے تعزیت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اردن کے ولی عہد شہزادہ حسین بن عبداللہ نے حال ہی میں اپنی شادی کے موقعے پر دوست کی غلطی سے چلنے والی گولی سے ہلاک ہونے والے دلہا حمزہ الفناطسہ کے گھر آئے اور سوگوار خاندان سے تعزیت اور ہمدردی کا اظہار کیا۔

دوسری طرف شادی بیاہ کے مواقع پر فائرنگ اور آتش بازی کے نقصانات کے بارے میں گھر گھر بحث جاری ہے اور ہر ایک اسے ناپسندیدیدگی کی نگاہ سے دیکھ رہا ہے۔

مقتول دلہا حمزہ الفناطسہ کے اہل خانہ سے ملاقات کے موقعے پر ولی عہد شہزادہ حسین بن عبداللہ نے کہا کہ شادی کے خوش گوار موقعے پر دلہا کی گولی لگنے سے موت بلا شبہ ایک المناک واقعہ ہے۔ مجھے افسوس ہے کہ میں دو ہفتوں کے بعد ایک ایسے موضوع کے ساتھ واپس آیا ہوں جس سے ہم سب متاثر ہیں۔ "

انہوں نے مزید کہا کہ "میں کہتا ہوں کہ قانون پر سختی سے عمل درآمد ہونا چاہیے اور ہمیں سنجیدہ ہونا چاہیے۔ مسئلہ خوشی سے غم میں بدل گیا ہے۔ شادیوں پر گولیاں چلانا ہمارا رواج نہیں اور نہ ہی ہماری مستند روایات ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ "ایک بار پھر ہمیں سنجیدہ ہونا چاہیے۔ یہ ایک عادت ہے جس سے ہم چھٹکارا حاصل کرنا چاہتے ہیں۔"

قاتل کے خلاف دو الزامات

قابل ذکر ہے کہ معان پبلک پراسیکیوٹر نے بدھ کے روز اس شوٹر کو گرفتار کیا ہے جس نے گولیاں چلائیں اور اس کی شادی کے دوران اسے قتل کر دیا۔

مقتول اردنی دلہا حمزہ الفناطسہ
مقتول اردنی دلہا حمزہ الفناطسہ

پبلک پراسیکیوٹر نے جان بوجھ کر قتل کرنے اور غیر ضروری طور پر گولیاں چلانے کے الزامات بھی دائر کیے، شوٹر کو 15 دن کے لیے گرفتار کیا گیا۔ تفتیش کے دوران اس کی حراست میں توسیع کی جا سکتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں