سعودی عرب: عالمی سطح پر خطرے سے دوچار قمری پرندے کے شکار پر پابندی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں نیشنل سینٹر فار وائلڈ لائف ڈویلپمنٹ نے انکشاف کیا ہے کہ یورپی پرندہ "قمری" ان پرندوں میں سے ایک ہے جن کا شکار تمام افزائش اور نقل و حمل کے ممالک میں منع ہے، کیونکہ اس کی کم تعداد کے بعد اسے عالمی سطح پر معدوم ہونے کا خطرہ ہے۔ ضرورت سے زیادہ شکار کی وجہ سے خاص طور پر یورپ میں اس پرندے کی افزائش نسل کے علاقوں میں شدید کمی واقع ہوئی ہے۔

مرکز نے تصدیق کی کہ سعودی عرب میں شکارکے شوق کی مشق کرنے اور "فطری" پلیٹ فارم پر لائسنس کی درخواستیں وصول کرنے کے اجازت نامے کی مدت جمعہ 9/1/2023 کو شروع ہوئی، جو31 جنوری 31/2024 جاری کی۔ شکار کے لائسنس جاری کرنے کا مقصد شکار کو منظم کرنا اور قدرتی وسائل کے پائیدار استعمال کو مدنظر رکھنا، ضابطوں کے مطابق حیاتیاتی تنوع اور ماحولیاتی توازن کو برقرار رکھنا ماحولیاتی نظام سے نکلتا ہے۔

قمری پرندہ
قمری پرندہ

انہوں نے وضاحت کی کہ پائیدار جنگلی شکار کی مشق میں صرف وہ انواع شامل ہیں جنہیں شکار کرنے کی اجازت ہے اور اس کا اعلان ویب سائٹ اور "فطری" پلیٹ فارم پر کیا گیا ہے۔

مرکز نے انکشاف کیا کہ پرندوں کی 29 اقسام ہیں جن کے شکار کی اجازت ہے، جن میں 24 پرندوں کو 1 ستمبر 2023 سے 30 نومبر 2023 تک موسم خزاں کے دوران شکار کرنے کی اجازت ہے 4 ایسی اقسام ہیں جن کے شکار کی موسم سرما میں یکم دسمبر 2023 سے 31 جنوری 2024 تک اجازت ہے اور اس دوران معدومیت کےخطرسے دوچار پرندوں کے شکارکی اجازت نہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں