سعودی عرب:غیرملکی کوذاتی بنک اکاؤنٹ سےاقتصادی سرگرمیوں کی اجازت پرقیداورجرمانہ کی سزا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب میں پبلک پراسیکیوشن نے ایک نیا قانون متعارف کرایا ہے جس کے تحت کسی بھی مقامی شخص کا اپنے ذاتی بنک اکاؤنٹ سے کسی غیر ملکی کو غیر مجاز اقتصادی سرگرمیوں کی سہولت دینے پر اکاؤنٹ ہولڈر کو پانچ سال قید اور50 ہزار سعودی ریال جرمانہ یا دونوں سزائیں دی جائیں گی۔

پبلک پراسیکیوشن نے غیر سعودیوں کو مملکت میں مقامی شہریوں کے اکاؤنٹ کےسے اقتصادی سرگرمیوں کی اجازت نہیں۔ ایسا کرنے کی صورت میں غیرملکیوں کو اپنے اکاؤنٹ کے ذریعے کاروباری سرگرمیوں یا لین دین کی سہولت دینے والے شخص کو سزا دی جائے گی۔

پبلک پراسیکیوشن نے اس بات کی تصدیق کی کہ کسی شخص کے لیے یہ ممنوع ہے کہ وہ کسی غیر سعودی کوغیر مجاز طریقے سے اپنے اکاؤنٹ سے مملکت میں اقتصادی سرگرمیوں کی اجازت دے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں