مسجد حرام میں زائرین کے ہمراہ آنے والے بچوں کےلیے مثبت پروگرامات اور اقدامات کیا ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عمرہ کی سعادت حاصل کرنے اور مسجد نبوی ﷺ میں حاضر ہونے والے زائرین میں سے بعض کے ساتھ بچے بھی آتے ہیں۔ حرمین شریفین کی انتظامیہ نے بڑی عمر کےزائرین کو تمام سہولیات کی فراہمی کے ساتھ ساتھ ایسے پروگرامات اور اقدامات بھی متعارف کرائے ہیں جن کی بہ دولت ننھے زائرین کے دماغوں پر اس دورے کے مثبت اثرات ڈالنے کی کوشش کرنا ہے، تاکہ بچے اس دورے سے ایک اچھا انسانی تجربہ اور اثر لے کراپنے گھروں کو جائیں۔

صدارت عامہ برائے امور حرمین شریفین کے زیراہتمام بچوں کے امور کی دیکھ بھال کی ذمہ دار ایجنسی نے زائرین کے ساتھ آنے والے بچوں کے لیے الگ پروگرامات وضع کیے ہیں۔ اس تجربہ میں مسجد حرام کے صحن میں داخل ہونے والے بچوں پر روحانی تجربے سے بھرپور مہمان نوازی اور دوستانہ استقبال کرنے میں اپنا حصہ ڈالا ہے۔

مسجد حرام میں آنے والے ہر بچے کی کلائی پر ایک ’گائیڈ بریسلٹ‘ پہنایا جاتا ہے
جس پر بچے کی شناخت کی تفصیلات، ڈیٹا اور رابطہ نمبر لکھا جاتا ہے۔ بچے کے گم ہونے کی صورت میں یہ بریلسٹ رہ نمائی فراہم کرتا ہے اور اس کے خاندان تک پہنچانے میں مدد گار ثابت ہوتا ہے۔ بریسلیٹ میں کئی زبانوں میں ایک "بار کوڈ" بھی ہے، جن میں سب سے اہم اردو اور بنگالی ہیں۔ مالے، فارسی، ترکیہ، ہاؤسا، انگریزی اور فرانسیسی زبانیں شامل ہیں۔
رمضان المبارک میں عروج پر ہو نے والے عمرہ سیزن اور حج کے ایام میں بچوں کا خاص خیال رکھا جاتا ہے۔

حرم لائبریری میں اس کے خواتین کے حصے میں ایسے پروگرام، تقریبات اور اقدامات بھی منعقد کیے جاتے ہیں جو بچے کی عمر کے ساتھ مطابقت رکھتے ہیں تاکہ ان میں علم کی محبت پیدا ہو، ان کی تخلیقی صلاحیتوں کو پروان چڑھایا جائے، ان کی لسانی صلاحیتوں کو تقویت ملے اور حصول علم کے لیے ان کے شوق کوجلا بخشے۔ بچوں کی رہ نمائی کے لیے متنوع موضوعات پر 2400 سے زیادہ کتابیں تیار کی گئی ہیں جو ہر بچے کو اس کی عمر، زبان اورمزاج کے مطابق دی جاتی ہیں۔تصویری کہانیوں پر مشتمل کتابیں کم عمر بچوں کے لیے تیار کی گئی ہین۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں