جدہ کا تاریخی ’اخبار گھر‘ میوزیم سعودی عرب میں صحافتی ثقافت کا منفرد مرکز

جدہ کے اس منفرد عجائب گھر میں شاہ عبدالعزیزآل سعود کےدور سے آج تک کے لاکھوں اخبارات، جرائد، سی ڈیز، ہزاروں تصاویر اور فن پارے محفوظ ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب کے شہرجدہ میں نجی سطح پر تیار’نیوز پیپر میوزیم‘ مملکت میں صحافتی تاریخ کے ریکارڈ کا اپنی نوعیت کا پہلا مرکز ہے جس میں بانی مملکت شاہ عبدالعزیز بن عبدالرحمان آل سعود مرحوم اورموجودہ خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز حفظہ اللہ کے دور تک کے اخبارات کا ریکارڈ ہے۔

جدہ کے اس منفرد میوزیم کی منظوری 1440ھ دی گئی تھی۔ اس عجائب گھر کا شمار سعودی عرب میں تاریخ کے اہم ترین عجائب گھروں میں ہوتا ہے جسے "تاریخ کے صفحات" کا نام دیا گیا ہے۔

سعودی پریس ایجنسی’ایس پی اے‘ کی میڈیا ٹیم نے میوزیم کے مالک جابر بن عبداللہ الغامدی سے ملاقات کی۔ ان کی اجازت سے میوزم کے اندر کیمرہ ٹیم نے میوزیم کی عکس بندی کی۔ یہ عجائب گھرثقافتی خزانے کا ایک بہت بڑا ذخیرہ ہے۔اس میں اخبارات، رسائل کی لاکھوں کاپیاں محفوظ کی گئی ہیں۔ اخبارات کے علاوہ اس میں پرانی کتابیں، قدیم نوادرات اور دیگرنایاب اشیاء کے نمونے بھی رکھے گئے ہیں۔

الغامدی نے بتایا کہ عجائب گھر میں سنہ 1395ھ یعنی آج سے تقریبا پچاس سال قبل کے اخبارات و جرائد کا ریکارڈ ہے۔1408ھ میں کنگ فہد لائبریری کے ساتھ ڈیل کی جس کے بعد یہ ریکارڈ مربوط کیا گیا۔ اس میوزیم کا مقصد اپنے مواد میں مملکت سعودی عرب کی تاریخ کو اجاگر کرنا ہے۔

جدہ کا تاریخی ’اخبار گھر‘ میوزیم

انہوں نے کہا کہ اس میوزیم میں پرانے اخبارات نہیں بلکہ سعودی عرب کی جدید تاریخ محفوظ ہے۔بانی سعودی عرب شاہ عبدالعزیز آل سعود سے لے کرآج تک کے جرائد اور اخبارات کا ریکارڈ رکھا گیا ہے۔ ان اخبارات میں سعودی عرب کے فرمانرواؤں کی کامیابیوں اور مملکت کی تاریخ میں مختلف محکموں کی تاریخ کا ریکارڈ محفوظ ہے۔

الغامدی نے کہا کہ عجائب گھر میں سعودی دور کے آغاز سے لے کر سنہ 1442ھ تک تقریباً 95 فیصد سعودی اخبارات کا مکمل ذخیرہ موجود ہے اور یہ کہ سعودی عرب میں شائع ہونے والے تقریبا تمام سپلیمنٹس اور رسالے میوزیم میں موجود ہیں۔ شاہ عبدالعزیز کے دور سے لے کر آج تک اور شاہ عبدالعزیز کے بیٹوں اور ان کے پوتے پوتیوں کی 30 ہزار سے زیادہ مختلف تصویریں بھی اس ریکارڈ کا حصہ ہیں۔ تقریباً 40 ہزار سی ڈیز کے علاوہ مملکت میں منعقد ہونے والے تمام مختلف پروگراموں پر مشتمل 10 ہزار سے زیادہ کتابیں شامل ہیں۔ ان میں سے کئی کتابوں کو انہوں نے اپنی جیب سے 8 سے زیادہ نجی لائبریریوں کی خرید کر میوزیم کا حصہ بنایا۔

مکہ اور مدینہ کے خطوں کی تاریخ اور حج کے احساسات کے میوزیم کی دستاویزات کے بارے میں الغامدی نے کہا کہ "میوزیم میں 40 سال سے زائد عرصے سے تین لاکھ سے زیادہ تصاویر اور مختلف سائز کے کارڈز محفوظ کیے گئے ہیں مملکت میں نشاۃ ثانیہ، اور خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود کے لیے ایک خصوصی فائل شامل ہے، جس میں ان کی 700 سے زیادہ تصاویر اور 3000 سے زیادہ پینٹنگز شامل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں