تہران کو مصر کے ساتھ تعلقات کے قیام میں کوئی رکاوٹ نظر نہیں آتی: ایرانی صدر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایرانی صدر ابراہیم رئیسی نے جمعرات کو کہا ہے کہ ان کا ملک مصر کے ساتھ تعلقات کے قیام میں کوئی رکاوٹ نہیں دیکھتا۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایران اور مصر کے وزرائے خارجہ کی ملاقات تعلقات کی بحالی کا ایک باب ثابت ہو سکتی ہے۔

ایرانی ایوان صدر کی ویب سائٹ پر صدر رئیسی کے حوالے سےان کے دورہ نیویارک کے اختتام پر ایک پریس کانفرنس کے حوالے سے بیان پوسٹ کیا گیا ہے۔ اس بیان میں ان کا کہنا ہے کہ اسلامی جمہوریہ مصر کے ساتھ تعلقات قائم کرنے میں کوئی رکاوٹ نہیں دیکھتا۔ مصری فریق کو بھی اس معاملے سے آگاہ کر دیا گیا تھا۔ دونوں ملکوں کے وزرائے خارجہ کے درمیان نیویارک میں ہونے والی ملاقات ایران اور عرب جمہوریہ مصر کے درمیان تعلقات کی بحالی کی راہ ہموار کر سکتی ہے۔

مصر اور ایرنی جھنڈے
مصر اور ایرنی جھنڈے

مصری وزارت خارجہ کے ترجمان احمد ابو زید نے کہا کہ وزیرخارجہ سامح شکری نے بدھ کو اپنے ایرانی ہم منصب حسین امیر عبداللہیان سے ملاقات کی۔

ابو زید نے "ایکس" پلیٹ فارم (سابقہ ٹویٹر) پر اپنے آفیشل اکاؤنٹ پر مزید کہا کہ یہ ملاقات نیویارک میں اقوام متحدہ میں مصر کے مستقل مشن کے ہیڈ کوارٹر میں ہوئی۔

مصری کونسل برائے خارجہ امور کے سربراہ محمد العرابی نے گذشتہ ماہ کہا تھا کہ "مصر اور ایران کے درمیان سفارتی تعلقات موجود ہیں۔ ان میں کوئی خلل نہیں پڑا ہے۔"

گذشتہ مئی میں ایرانی رہبر اعلیٰ علی خامنہ ای نے عمان کے سلطان ہیثم بن طارق سے ملاقات کے دوران اعلان کیا تھا کہ ایران مصر کے ساتھ تعلقات کی بحالی کا خیر مقدم کرتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں