تیل کی قیمتوں میں اضافے کا مقصد روس کی مدد نہیں، مارکیٹ کا استحکام ہے: محمد بن سلمان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے کہا ہے ’’کہ اوپیک کا تیل کی پیداوار میں کمی کا فیصلہ مارکیٹ کے استحکام پر مبنی تھا اور اس کا مقصد یوکرین میں روس کی جنگ میں مدد کرنا نہیں تھا۔‘‘

ولی عہد نے امریکی ٹی وی فاکس نیوز پر بدھ کو علی الصباح نشر ہونے والے ایک انٹرویو میں بتایا: "ہم صرف رسد اور طلب کو دیکھتے ہیں۔ اگر رسد کی کمی ہے تو اوپیک پلس میں ہمارا کردار اس کمی کو پورا کرنا ہے۔ اور اگر رسد ضرورت سے زیادہ ہو تو اوپیک پلس میں ہمارا کردار مارکیٹ کے استحکام کے لیے اس کی پیمائش کرنا ہے۔"

ایک سوال کے جواب میں سعودی رہنما نے کہا ’’کہ مملکت کے روس اور یوکرین دونوں کے ساتھ اچھے تعلقات ہیں اور ریاض ماسکو اور کیئف کے درمیان بحران کو حل کرنے کے لیے سخت محنت کر رہا ہے۔‘‘

یوکرین میں روس کی جنگ کے بارے میں سوال پر شہزادہ محمد نے کہا کہ کسی دوسرے ملک پر حملہ کرنا "واقعی برا" ہے۔

اگست میں چین، بھارت، امریکہ اور یوکرین سمیت تقریباً 40 ممالک کے نمائندوں نے سعودی شہر جدہ میں ایک امن سربراہی اجلاس میں شرکت کی جس کا مقصد تنازع کا خاتمہ تھا، لیکن روس اس کانفرنس میں شریک نہیں ہوا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں