ایران کی قدس فورس کے کمانڈر کی شام میں مشترکہ مشقوں میں شرکت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایرانی میڈیا کے مطابق پاسداران انقلاب کے بیرون ملک آپریشنز کے ذمہ دار ونگ قدس فورس کے کمانڈر اسماعیل قاآنی نے شام کا دورہ کیا جہاں اُنہوں نے دونوں اتحادی ممالک کے درمیان مشترکہ فوجی مشقوں کی نگرانی کی۔

ایران کی ’تسنیم‘ نیوز ایجنسی نے بتایا ہے کہ قاآنی نے شام کے سینئیر حکام کے ساتھ ملاقات کی۔ ملاقات میں شام کو درپیش فوجی اور سکیورٹی چیلنجوں سے نمٹنے سمیت دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس کے علاوہ جنرل قاآنی نے ایران اور شام کے مشترکہ فوجی مشق کی نگرانی کی۔

ایجنسی نے رپورٹ کیا کہ انہوں نے شام اور ایران کے درمیان "برادرانہ تعلقات" کو سراہا اور اس بات پر زور دیا کہ ایران چیلنجوں کا سامنا کرنے میں شامی عوام اور ان کی قیادت کے ساتھ کھڑا رہے گا۔

قاآنی کو میجر جنرل قاسم سلیمانی کی جگہ قدس فورس کا کمانڈر مقرر کیا گیا تھا جنہیں 2020ء میں بغداد ہوائی اڈے کے قریب امریکی ڈرون حملے میں ہلاک کر دیا گیا تھا۔

قدس فورس سرحدوں کے باہر محافظوں کا دستہ ہے۔ امریکا نے اسے 2019ء میں اپنی "دہشت گرد تنظیموں" کی فہرست میں شامل کیا، جب کہ ایران کا دعویٰ ہے کہ اس کی بیرون ملک سرگرمیاں علاقائی تعاون کے تناظر میں ہیں جن کا مقصد استحکام کو بڑھانا اور مغربی مداخلت کو روکنا ہے۔

ایران شام کے صدر بشار الاسد کا ایک بڑا اتحادی ہے اور اس نے حکومت مخالف مظاہروں کو دبانے کے بعد 2011 میں جنگ شروع ہونے کے بعد سے اسے اقتصادی، سیاسی اور فوجی مدد فراہم کی ہے۔

تہران کی حمایت نے شامی حکام کو تنازع کے آغاز میں کھوئے ہوئے بیشتر علاقوں کو دوبارہ حاصل کرنے میں مدد کی اور ایران کو ایک اہم کردار ادا کرنے کی اجازت دی جب کہ اسد تعمیر نو پر توجہ مرکوز کرنا چاہتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں