عراق: شادی میں آتش زدگی،آگ نے دلہن کی ماں اور بھائی کو بھی بھسم کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

منگل کی رات عراق میں ایک شادی ہال میں لگنے والی آگ اور کم از کم 100 افراد کی ہلاکت کے بعد شمالی عراق میں نینوی گورنری کے ضلع الحمدانیہ میں غم و غصے اور صدمے کا ماحول برقرار ہے۔

اس تباہی اور ناقابل بیان صدمے کے بعد دلہن شدید صدمے میں ہے۔ دلہن حنین کی والدہ اور بھائی جمعرات کو اس واقعے میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے انتقال کر گئے۔ دونوں ماں بیٹا شادی کی تقریب کے دوران لگنے والی خوفناک آگ سے بری طرح جھلس گئے تھے۔

ایک طبی ذریعے نے مقامی میڈیا کو بتایا کہ دلہن کی والدہ اور بھائی موصل کے ایک ہسپتال میں شدید جھلسنے کے نتیجے میں دم توڑ گئے۔

قابل ذکر ہے کہ الحمدانیہ میں ایک شادی ہال میں شادی کے دوران لگنے والی سے کم از کم 100 افراد ہلاک اور 150 سے زائد زخمی ہوئے تھے۔

جب کہ تحقیقات سے پتا چلا کہ ہال کی چھت پر آتش بازی اور انتہائی آتش گیر کپڑے آگ لگنے کی بڑی وجہ تھے۔

شہری دفاع کے ترجمان جودت عبدالرحمن کے مطابق اس بڑی تعداد میں ہلاکتوں کی وجہ یہ ہے کہ "ہنگامی راستے بند کر دیے گئے تھے۔ صرف ایک دروازہ بچا تھا جو مہمانوں کے داخلے اور باہر نکلنے کا مرکزی دروازہ تھا۔"

انہوں نے اے ایف پی کوبتایا کہ "حفاظتی سامان عمارت کے لیے نامناسب اور ناکافی تھا، اس سے متاثرین کی تعداد میں بھی اضافہ ہوا۔

مقبول خبریں اہم خبریں