عراق میں 40 روز قبل دفن کردہ شامی کی قبرسے آوازیں آنے کا معمہ کیا ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عراق میں ایک قبر سے آنے والی آوازوں نے خوف کی ایسی فضاء پیدا کی کہ ایسا منظر فلموں میں بھی نہیں دیکھا گیا۔

عراق کے علاقے موصل کے شمال میں واقع فایدہ کے مقام پر ایک قبرستان کے اندر سے آواز سننے کے بعد لوگوں کی بڑی تعداد قبرستان میں جمع ہوگئی جس کی وجہ سے حکام کو فوری مداخلت کرنا پڑی۔

طاقت ور آواز؟!

موصل کے فایدہ علاقے کے لوگ تقریباً 40 دن قبل فوت ہونے والے ایک شامی مہاجر کی قبر سے آنے والے دروازے پر دستک دینے جیسی آواز سننے کے بعد شہر کے قبرستان میں جمع ہوئے۔

معلومات کے مطابق مقتول کی بیٹی نے بتایا کہ اس نے قبر سے ایک زوردار آواز سنی، جیسے کوئی دروازہ کھٹکھٹا رہا ہو جو باہر نکلنے کی کوشش کر رہا ہو۔ اس کے ساتھ دیگر لوگوں نے گواہی دی کہ انہوں نے بھی وہی آواز سنی۔ ایسا لگ رہا تھا کہ کوئی قبر سے باہر نکلنے کی کوشش کررہا ہے۔

اگرچہ اس واقعے کی سرکاری طور پر تصدیق نہیں کی گئی، لوگ میڈیا اداروں کے ساتھ ساتھ قبر پر جمع ہوئے، عدالت کے فیصلے کا انتظار کر رہے تھے۔ تاہم جج نے قبردوبارہ کھولنے کی اجازت دینےسے انکار کردیا۔

قابل ذکر ہے کہ قبر کے اندر دفن ہونے والی میت 60 سالہ شامی پناہ گزین ہے۔ اس کے دماغ میں دو اسٹروک آئے تھے اور اسے تقریباً 40 روز قبل سپرد خاک کیا گیا تھا۔

جب کہ اس کہانی نے سوشل نیٹ پلیٹ فارمز پرایک نئی بحث چھیڑ دی۔ لوگوں نے حیرت اور خوف کا اٖظہار کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں