سالانہ 70 ملین عالمی سیاحوں کو راغب کرنے کا سعودی منصوبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب نے اپنے آپ کو 2030 تک سالانہ 70 ملین بین الاقوامی سیاحوں کو راغب کرنے کا ہدف مقرر کرلیا۔ دنیا میں ایک پسندیدہ سفری مقام اور دنیا کے سب سے زیادہ دیکھے جانے والے ملکوں میں شامل ہونے کے لیے سعودی عرب 800 بلین ڈالر کے اپنے منصوبے کو تیز کرنا چاہتا ہے۔

وزیر سیاحت احمد الخطیب نے کہا کہ سعودی عرب نے 50 ملین زائرین کا اپنا سابق ہدف بڑھا دیا ہے۔ اس سال یہ تعداد 25 سے 30 ملین کے درمیان ہوگی۔ سعودی عرب میں سیاحت نے دو ماہ کے دوران 4.9 ملین زائرین کے حساب سے تاریخی تعداد ریکارڈ کی ہے۔

ایک رپورٹ کے مطابق انہوں نے کہا کہ یہ دہائی کے اختتام کے لیے ایک انتہائی معقول ہدف ہے۔ سیاحت کے شعبہ میں مملکت میں بے پناہ سرمایہ کاری کی جا رہی ہے۔ سعودی عرب نے نئے ریزارٹس کے قیام اور لوگوں کو ملک میں لانے کے لیے نئی ایئر لائنز بنانے کا منصوبہ بنایا ہے۔

سعودی عرب بحیرہ احمر کے ساحل پر ہوٹلوں اور ریزورٹس کی تعمیر پر بھاری رقم خرچ کر رہا ہے۔ یہ العلا اور دریہ اور دیگر تاریخی مقامات کی ترقی کے لیے بھی کام کر رہا ہے۔

زیادہ سیاحوں کو راغب کرنا ولی عہد محمد بن سلمان کے تیل پر منحصر معیشت کو متنوع بنانے کے عزائم کا حصہ ہے۔ اس منصوبے کی مالیت 1.1 ٹریلین ڈالر ہے۔ ولی عہد 2030 تک سعودی جی ڈی پی میں سیاحت کا حصہ 10 فیصد تک بڑھانا چاہتے ہیں۔

الخطیب نے کہا کہ حکومت نے کل سالانہ سیاحتی دوروں کے لیے اپنے 2030 کے ہدف پر نظر ثانی کی ہے۔ مقامی افراد سمیت سیاحوں کا ہدف 100 ملین سے بڑھا کر 150 ملین کردیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں