بزرگ شہری سے فراڈ کے ذریعے 23ملین ریال ہتھیانےوالے سات رکنی گینگ پر فرد جرم عاید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب میں مالی فراڈ اور دھوکہ دہی میں ملوث سات افراد پر مشتمل ایک گروپ کو حراست میں لیا گیا ہے جن پر ایک بزرگ اور بیمار شہری سے دھوکے سے 23 ملین ریال کی رقم ہتھیانے کی کوشش کا الزام عاید کیا گیا ہے۔

سعودی پراسیکیوشن نے تفتیشی طریقہ کار پر عمل کرتے ہوئے مالی فراڈ، جعلسازی، منی لانڈرنگ اور معلوماتی جرائم کے الزامات میں سات شہریوں پر مشتمل ایک گروہ پر فرد جرم عائد کردی ہے۔

گہری اور طویل تفتیش کے طریقہ کار سے انکشاف ہوا کہ مجرمانہ تنظیم جس کی سربراہی ایک کاروباری شخصیت کررہی تھی۔ اس میں ایک وکیل کے بھیس میں شامل ایک ایجنٹ کے علاوہ ایک لائسنس یافتہ خاتون وکیل، ایک سرکاری ملازم، ایک ٹیلی کمیونیکیشن کمپنی میں ملازم اور رئیل اسٹیٹ آفس کا ایک ملازم شامل ہے۔ ان پر ایک بزرگ شہری کو دھوکہ دینے اور اس کی بیماری سے فائدہ اٹھا کر اس کی جائیدادیں ہتھیانے کی سازش کا الزام عاید کیا گیا ہے۔

جعلی وکیل نے بزرگ شخص کے بارے میں اپنے سابقہ علم اور اس کی جانب سے جائیداد کےحوالے سے اس کی نمائندگی، اور اس کے مالی معاملات اور صحت کی حالت کی تفصیلات کے بارے میں اس کے علم سے فائدہ اٹھایا۔

اس نے تجارتی معاہدوں کو تبدیل کرنے کے علاوہ جعلی تجارتی معاہدے کرائے۔

کسی ایک سرکاری ایجنسی میں ملازم کی مدد سے متاثرہ شخص کی سرکاری الیکٹرانک سروسز کی تعداد اور کمپنی سے سم کارڈ نکالنے۔ متاثرہ کے نام پر مواصلاتی رابطے کرنے، متاثرہ کی نمائندگی کرنے والے وکیل کی شرکت سے جعلی پاور آف اٹارنی کی مدد سے الیکٹرانک بانڈ جاری کرنے اور ریئل اسٹیٹ آفس کے ملازم کی نگرانی میں فرضی جگہ پر سامان کے لیے جھوٹے دعووں پر مبنی مقدمہ درج کیا گیا۔

اس مالی فراڈ کے منظم جرم کے نتیجے میں 23 ملین سعودی ریال کی رقم ضبط کی گئی۔ اس کے علاوہ ایک قانونی فرم کھولنے اور لائسنس حاصل کیے بغیر اپنے پیشے پر عمل کرنے والے وکیل کا روپ دھارنے والے شخص کو بھی گرفتار کیا گیا۔ پتہ چلا کہ اس کی تعلیمی قابلیت اور ذاتی معلومات خود ملازم نے غلط ثابت کی ہیں۔

مدعا علیہان کو گرفتار کرنے کے بعد ان سے تفتیش کی گئی اور ان کے خلاف ایک مجرمانہ مقدمہ دائر کیا گیا جس میں ان کے الزامات کے ثبوت بھی شامل ہیں۔ ملزمان پر فرد جرم عاید کردی گئی ہے جس کے بعد انہیں جلد ہی سزا سنائی جائے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں