مشرق وسطیٰ

قوم متحد رہے، ہمیں مشکل وقت کا سامنا ہے: اسرائیلی صدر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل کے یروشلم پوسٹ اخبار کی رپورٹ کے مطابق اسرائیلی صدر اسحاق ہرزوگ نے ہفتے کے روز کہا ہے کہ ان کا ملک مشکل وقت کا سامنا کر رہا ہے، کیونکہ حماس کی جانب سے اس کے خلاف بڑے پیمانے پر فوجی آپریشن شروع کرنے کے بعد اسرائیل میں میں جنگ کی آگ بھڑک اٹھی ہے۔

ہرزوگ نے مزید کہا کہ "میں سب سے مطالبہ کرتا ہوں کہ ہوم فرنٹ کمانڈ کی ہدایات پر عمل کریں، باہمی تعاون کا مظاہرہ کریں اور ثابت قدم رہیں۔"

حماس نے غزہ سے اسرائیل میں راکٹ داغنے اور دراندازی کی کارروائیوں کی ذمہ داری قبول کی ہے۔ حماس کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اس کے ارکان اسرائیل میں ایک آپریشن کر رہے ہیں جسے اسے "طوفان الاقصی" کا نام دیا گیا ہے جبکہ اسلامی جہاد تحریک کا کہنا ہے کہ وہ اس جنگ میں حماس کے ساتھ کھڑی ہے۔

غزہ کی پٹی پر حملے کے بعد اسرائیل پر راکٹ باری کرنے، اسرائیلی بستیوں میں گھسنے، یرغمال بنانے، فوجیوں کو گرفتار کرنے، اسرائیلی فورسز کے ساتھ تصادم اور فائرنگ کے تبادلہ کے مناظر دیکھے گئے ہیں۔

حماس کے میڈیا نے متعدد اسرائیلی فوجیوں کے پکڑے جانے کی تصدیق کی ہے جب کہ تصاویر میں غزہ کی پٹی میں اسرائیلی ٹینکوں اور فوجی گاڑیوں کا کنٹرول دکھایا گیا ہے۔

اس سے قبل العربیہ اور الحدث کے نامہ نگاروں نے اطلاع دی تھی کہ فلسطینی عسکریت پسندوں نے غزہ کی پٹی کے اطراف میں 4 بستیوں میں گھس کر لوگوں کو یرغمال بنایا اور اسرائیل کے اندر کئی علاقوں کا کنٹرول بھی سنبھال لیا۔

ٹیلی ویژن فوٹیج میں غزہ سے داغے گئے میزائلوں کی مغربی کنارے میں بیت لحم اور یروشلم کے درمیان واقع علاقے اور اسرائیل کے آئرن ڈوم سسٹم کے ذریعے ان کو روکتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں