حماس کے جنگجو اب بھی اندر ہیں، اسرائیل نے ابھی تک انہیں وہاں سے نہیں نکالا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج کی اس بات کی تصدیق کے ساتھ کہ اس کی افواج اب بھی متعدد اسرائیلی بستیوں اور شہروں میں فلسطینیوں کی دراندازی کا مقابلہ کر رہی ہیں، حماس نے اعلان کیا کہ اس کے جنگجو اب بھی اندر موجود ہیں۔

حماس کے عسکری ونگ عزالدین القسام بریگیڈز نے اتوار کے روز ایک بیان میں وضاحت کی کہ اس کے جنگجو اسرائیل کے اندر کئی مقامات پر اب بھی "شدید جھڑپوں میں مصروف"ہیں۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ غزہ کی پٹی سے ملحقہ کئی علاقوں میں ابھی بھی لڑائی جاری ہے، جن میں اوفاکیم، سدیروٹ، ید موردچائی، کفر عزا، بیری وائٹڈ اور کسوفیم شامل ہیں۔

ہم ابھی تک کامیاب نہیں ہوئے: اسرائیل

دوسری طرف اسرائیلی پولیس نے اعلان کیا کہ وہ ابھی تک دراندازوں کا مقابلہ کرنے میں کامیابی کا اعلان کرنے سے بہت دور ہے۔ پولیس کے ترجمان ایلی لیوی نے ’یدیعوت احرونوت‘ ویب سائٹ کو بتایا کہ "ہم اسرائیلی علاقے میں داخل ہونے والے دراندازوں کا مقابلہ کرنے میں اپنی کامیابی کا اعلان کرنے سے بہت دور ہیں۔"

یہودی آبادکار بستیوں سے فرار ہوتے ہوئے
یہودی آبادکار بستیوں سے فرار ہوتے ہوئے

انہوں نے مزید کہا کہ "غیر واضح طور پر اسرائیل کی سرحدوں کے اندر مسلح افراد موجود ہیں۔"

اسرائیلی فوج نے بتایا کہ اس نے غزہ میں 426 اہداف پر بمباری کی۔

فلسطینی وزارت صحت کے انڈر سیکرٹری یوسف ابو الریش نے العربیہ الحدث کو وضاحت کرتے ہوئے بتایا کہ محاذ آرائی کے آغاز سے اب تک فلسطینیوں کی ہلاکتوں کی تعداد 313 ہو گئی ہے اور تقریباً 1,900 زخمی ہو چکے ہیں۔

اسرائیل کی جانب سے ہلاکتوں کی تعداد 350 تک پہنچ گئی اور 1,700 سے زائد زخمی۔ہلاک ہونےوالوں میں 30 پولیس اہلکار بھی شامل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں