جلد جنگ روکنا ناممکن ہے: غزہ کے فلسطینی گروپوں کی دھمکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسلامی جہاد تحریک کے رہنما اور اس کے سیاسی بیورو کے رکن ناصر ابو شریف کے مطابق غزہ کے فلسطینی گروپوں نے جنگ جاری رکھنے کے عزم کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے اس بات کی تصدیق کی کہ غزہ کی پٹی میں فلسطینی دھڑوں اور اسرائیل کے درمیان جنگ کو جلد روکنا ناممکن ہے۔

ابو شریف نے مزید کہا کہ اگر اسرائیل چاہتا ہے تو تمام فریق حرکت میں آسکتے تھے۔ لیکن اب اسرائیل مزاحمتی گروپوں سے سخت دھچکے کے بعد قیمت چکانا چاہتا ہے۔ انہوں نے زور دیا کہ قیدیوں کے معاملہ میں تبادلہ کی بات جلد مذاکرات کی میز پر لائی جائے گی۔ خاص طور پر بڑی تعداد میں اسرائیلیوں کی قید ہونے کی وجہ سے قیدیوں کے تبادلہ کا معاملہ پر پیش رفت کا امکان پیدا ہوگیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ فلسطینی دھڑوں کے ہاتھ میں اسرائیلی قیدیوں کی بڑی تعداد کا ہونا اسرائیل کو قیدیوں کا معاملہ اٹھانے پر مجبور کرے گی۔ لیکن اسرائیل فی الحال حالیہ حملے کی سب سے زیادہ قیمت وصول کرنا چاہتا اور اس کے ساتھ جو ہوا اس کا جواب دینا چاہتا ہے۔ اس کے بعد ہی قیدیوں کے معاملہ پر بات چیت ہو سکتی ہے۔

الناصر صلاح الدین بریگیڈ نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’طوفان الاقصیٰ‘‘ کے تحت الناصر صلاح الدین بریگیڈ نے خودکش ڈرون استعمال کرنے کا اعلان کردیا ہے۔

ابھی مزید حیرتوں کا سامنا کرنا ہوگا

ابو شریف نے یہ بھی کہا کہ اس محاذ آرائی میں مزید حیرت انگیز باتیں ابھی سامنے آنے والی ہیں۔ القسام بریگیڈز کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اس کی فضائیہ نے معرکہ ’’ طوفان الاقصیٰ‘‘ کے دوران آغاز میں ہی تمام محاذوں پر 35 خود کش ڈرونز کا استعمال کیا۔ ان ڈرونز نے دشمن کے کئی ٹھکانوں کو نشانہ بنایا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں