فلسطین اسرائیل تنازع

اسرائیلی فوج کا حماس کے 1500 جنگجوؤں کی لاشیں ملنے کا دعویٰ؟

غزہ کی جنگ میں مرنے والے 38 مزید اسرائیلی فوجیوں کے نام جاری، 100 سے زاید اسرائیلی شہری حماس کی قید میں ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی کے ارد گرد جاری فضائی حملوں کے دوران لگ بھگ 1500 فلسطینیوں کو لقمہ اجل بنانے کا دعوی کیا ہے۔ اسرائیلی فوجی ترجمان کے مطابق یہ فلسطینی جنگجو تھے۔ ان کی لاشیں غزہ کے اردگرد سے ملی ہیں۔

اسرائیلی فوجی ترجمان نے یہ دعوی بھی کیا ہے کہ غزہ بارڈر کے ساتھ اسرائیلی پوزیشن مضبوط کر لی گئی ہے اور تقریبا ہر جگہ کا کنٹرول واپس فوج کے پاس آگیا ہے۔

واضح رہے ہفتے کے روز سے جاری جنگ کے بعد اسرائیلی ترجمان نے یہ دعوی منگل کے روز کیا ہے۔ ہفتے کے روز سے اب تک لگ بھگ 900 اسرائیلی ہلاک کر دئیے گئے ہیں، درجنوں کو فلسطینی مزاحمت کاروں نے قید کرنے کے بعد غزہ میں یرغمال بنا لیا ہے۔

تاہم منگل کے روز فوجی ترجمان نے اپنے جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ غزہ کے اردگرد کنٹرول کرنے کے بعد پیر اور منگل کی درمیانی شب کوئی بھی غزہ میں فلسطینی داخل نہیں ہو سکا۔ البتہ غزہ سے اسرائیلی قبضے والے علاقوں میں ابھی فلسطینی مزاحمت کاروں کی مداخلت جاری ہے۔

فوجی ترجمان نے غزہ کے نزدیک آباد اسرائیلیوں سے ان کی بستیاں خالی کرا لی ہیں تاکہ وہ فلسطینی مزاحمت کاروں کے حملوں سے محفوظ رہ سکیں۔

دوسری جانب ایک اندازے کے مطابق اب تک اسرائیلی بمباری سے غزہ کے رہائشیوں کی کم و بیش 687 شہادتیں ہو چکی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں