سعودی عرب:میڈیا میں باصلاحیت افراد کو بااختیار بنانے کے لیے5تربیتی اور ڈیجیٹل اقدامات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پیر کی شام سعودی عرب کے وزیر اطلاعات سلمان الدوسری نے ریاض میں "ویا ریاض" میں پہلی "میڈیا پارٹنرز" میٹنگ کے دوران مواصلات اور میڈیا کے شعبے میں 200 سے زیادہ دلچسپی رکھنے والے اور ماہرین کی موجودگی میں میڈیا کے پانچ منصوبوں کا آغاز کیا۔

ان منصوبوں کا مقصد وزارت اطلاعات اور میڈیا کے شعبے میں سرکاری اور نجی شعبوں کے شراکت داروں کے درمیان شراکت داری کو مضبوط بنانا ہے۔

اجلاس میں متعدد شعبوں اور ٹریکس میں متعدد منصوبوں کے اعلان کا مشاہدہ کیا گیا جو میڈیا کے شعبے میں صلاحیتوں کو فروغ دینے میں معاون ثابت ہوں گے۔

میٹنگ سے ایک تصویر
میٹنگ سے ایک تصویر

ان پروجیکٹس میں "کمیونیکیشن اکیڈمی" کا قیام شامل ہے جس کا مقصد سعودی عرب میں اشتہارات کے شعبے کو ترقی دینا اور باصلاحیت افراد کو ڈیجیٹل ایڈورٹائزنگ کے شعبے میں اپنی صلاحیتوں کو منوانے کا موقع فراہم کرنا ہے۔ "مواصلات" پروجیکٹ کے تحت اقنایت اقدام جو ڈیجیٹل مواد کی تخلیق کے میدان میں تربیت کے مواقع فراہم کرنے کے لیے شروع کیا جا رہا ہے۔ "میڈیا لیڈرشپ ٹریننگ" پروجیکٹ کا مقصد نئے کوالیفائیڈ نوجوانوں کو میڈیا کے لیڈنگ اداروں میں شامل کرکے انہیں بااختیار بنانا اور انہیں مقامی اور عرب میڈیا اداروں کی قیادت کے قابل بنانا ہے۔

میٹنگ میں "میڈیا زون" پروجیکٹ کے آغاز کا بھی مشاہدہ کیا گیا، جس میں مختلف میڈیا آرٹس کی مشق کے لیے مشترکہ کام کا ماحول فراہم کیا گیا۔میڈیا کے علم اور مہارت کو متنوع اور جدید طریقوں سے پیش کرنے کے لیے ایک خصوصی جگہ بنانے پرتوجہ دی جائے گی۔ "اسپیکرز" پروجیکٹ میں سرکاری ایجنسیوں اور نجی شعبے میں لیڈرشپ کی تیاری اور افراد کار کو بااختیار بنانا اور مختلف تربیتی پروگراموں کے ذریعے ان کی میڈیا کی مہارتوں کو بہتر بنانا ہے۔

اس موقع پر سعودی وزیر اطلاعات نے وضاحت کی کہ یہ سیشن سعودی وژن 2030 کے اہداف کے حصول کے لیے حکومتی اور نجی شعبوں کے مختلف شراکت داروں کے ساتھ تعلقات کو فروغ دینے کےاہداف کا حصہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں