سعودی کابینہ کا عالمی رابطوں کے ذریعے غزہ میں بڑھتی کشیدگی روکنے کے عزم کا اعادہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی کابینہ نے کہا ہے کہ’ سعودی عرب جائز حقوق کے حصول کی جدو جہد میں مسلسل فلسطینی عوام کے ساتھ کھڑا ہے۔

اجلاس میں کہا گیا کہ ’غزہ اور اس کے گرد ونواح میں لڑائی بند کرنی ضروری ہے۔ خطے میں جنگ کا دائرہ وسیع ہونے سے روکنے کے حق میں ہیں‘۔

سرکاری خبر رساں ادارے ایس پی اے کے مطابق کابینہ کا اجلاس منگل کو شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی زیر صدارت ریاض میں ہوا ہے۔ اجلاس میں ہمسایہ ملکوں کے ساتھ تعلقات مضبوط بنانے کے حوالے سے حالیہ سفارتی رابطوں پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

کابینہ نے شاہ سلمان اور ولی عہد کی جانب سے عالمی رہنماوں کے ساتھ ہونے والی بات چیت کا جائزہ لیا۔ اس کا مقصد سعودی عرب اور ان ممالک کے ساتھ مختلف شعبوں میں تعلقات مضبوط بنانا تھا۔

اجلاس میں فلسطینی صدر، اردن کے فرمانروا اور مصری صدر کے ساتھ سعودی ولی عہد کے ساتھ ٹیلی فونک رابطوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا کہ سعودی عرب نے تینوں ممالک کے ساتھ ٹیلی فونک رابطوں کے دوران اس امر پر زور دیا کہ’ غزہ اور اس کے گرد ونواح میں جنگ بند کرانے اور اس کا دائرہ پھیلنے سے روکنے کے لیے تمام علاقائی اور بین الاقوامی فریقوں کے ساتھ مزید رابطے اور کوششیں ضروری ہیں‘۔

ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے ٹیلی فونک رابطوں کے دوران عرب رہنماوں سے کہا کہ ’سعودی عرب فلسطینی عوام کے جائز حقوق کے حصول، ان کی امنگوں اور امیدوں، پائیدار اور مبنی بر انصاف امن کے حصول کی جدو جہد میں ماصی کی طرح فلسطینوں کے ساتھ کھڑا ہوا ہے‘۔

کابینہ نے کہا کہ’ تیل کی منڈی کے استحکام، توازن اور بین الاقوامی شراکت کی شرح نمو بڑھانے میں معاون ہر کوشش کے ساتھ ہیں‘۔ اجلاس میں اوپیک پلس کی مشترکہ وزارتی کمیٹی کے اجلاس کی قراردادوں کی حمایت کا اعادہ کیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں