فلسطین اسرائیل تنازع

مصری انٹیلی جنس نے حماس حملے سے پیشگی الرٹ نہیں کیا تھا۔ نیتن یاہو دفتر کی تردید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطینی مزاحمتی گروپ حماس کے ساتھ ہفتے کے روز ایک غیر معمولی صورت حال میں گھرے اسرائیل نے اس امر کی تردید کی ہے کہ حماس کی طرف سے حملوں کے بارے میں مصر نے کوئی پیشگی یا خفیہ اطلاع دی تھی۔ وزیر اعظم نیتن یاہو کے دفتر سے اس بات کی باضابطہ تردید کی گئی ہے۔

وزیر اعظم کے دفتر سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے، یہ بات کلی طور غلط اور بے بنیاد ہے کہ مصر کی جانب سے اسرائیل کو کوئی پیشگی خبرداری کی گئی تھی کہ حماس حملہ کرنے والا ہے۔ نہ ہی وزیر اعظم نے کوئی ایسی بات کی تھی۔ ،،

اسرائیلی وزیر اعظم کے دفتر کے اس ٹویٹر پر جاری کردہ بیان میں مزید کہا گیا ہے ،، مصری انٹیلی جنس کے سربراہ سے بھی نیتن یاہو حکومت بنانے سے لے کر اب تک کوئی ملاقات نہیں ہوئی ہے۔،،

واضح رہے مصری انٹیلی جنس کے ایک ذمہ دار نے کہا ہے کہ ،،اسرائیل کو تفصیل بتائے بغیر اشارہ کر دیا تھا کہ کچھ بڑا ہونے جارہا ہے۔،، یہ مصری ذمہ دار اسرائیل کے ساتھ رابطہ کاری کا کام بھی مصر کی طرف سے کرتے ہیں۔،،

اس مصری افسر کا کہنا ہے کہ ،،اسرائیلی حکام نے مغربی کنارے پر ساری توجہ مرکوز کر رکھی تھی اور غزہ سے کسی خطرے کو اہمیت نہیں دی جارہی تھی۔،،

،، البتہ ہم نے انہیں بتا دیا تھا کہ کوئی بڑا دھماکہ ہو سکتا ہے۔ کیونکہ ایسی صورت حال بن رہی ہے۔اس لئے ایسا کچھ جلدی اور نسبتا بڑا ہو سکتا ہے۔ لیکن اسرائیلیوں نے اس کو درست سمجھنے کے بجائے کم اہم جانا

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں