سعودی عرب:صحراؤں کوسبزہ زاروں میں بدلنے کے انقلابی پروگرام کےکیا مقاصد اوراہداف ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی حکومت مملکت میں سبزہ زاروں کو وسعت دینے، بڑے پیمانے پر شجر کاری کرنے اور سبزے کا احاطہ بڑھانے کی مہمات جاری رکھے ہوئے ہے۔

اس حوالے سے سعودی عرب میں میونسپل ، دیہی امور اور ہاؤسنگ کی وزارت نے "سبز مضافات" اقدام شروع کیا ہے جس کا مقصد رہائشی پروگرام کے منصوبوں میں پودوں کا احاطہ بڑھانا، رہائشیوں کے معیار زندگی کو بہتر بنانا اور ان منصوبوں میں رہائشی یونٹوں کی کشش کو بڑھانا ہے۔

اس اقدام سے رہائشی علاقوں میں آلودگی پیدا کرنے والے کاربن کے اخراج کو کم کرنے میں مدد ملے گی اورر وژن کے اہداف حاصل کیے جاسکیں گے۔

اس اقدام کے ذریعے وزارت دیہی امور اور ہاؤسنگ کا مقصد مملکت کے مختلف علاقوں میں 50 سے زیادہ منصوبوں میں 10 لاکھ 30 ہزار سے زیادہ درخت لگانا ہے۔ یہ درخت 55 ملین مربع میٹر سے زیادہ پراجیکٹ ایریاز پر لگائے جا رہے ہیں۔ اس میں 100,000 ہاؤسنگ یونٹس اور متعدد اسکول شامل ہیں۔ دیگر سہولیات میں 20 لاکھ مربع میٹر سے زیادہ گلیوں اور راہداریوں پر پودے لگانے کا ہدف مقرر ہے۔ یہ ہدف اس سال سے شروع ہوا ہے جو 2025 تک تین مرحلوں میں مکمل کیا جائے گا۔

اپنے پہلے مرحلے میں اس منصوبے کا مقصد دو لاکھ 70 ہزار سے زیادہ پودے لگائے جائیں گے۔ شجر کاری کے عمل میں علاقے کے لیے موزوں درختوں کا انتخاب کیا جائے گا۔

سعودی عرب کے انڈر سیکرٹری برائے محرک ہاؤسنگ سپلائی اینڈ رئیل اسٹیٹ ڈویلپمنٹ عبدالرحمن الطویل نے وضاحت کی کہ گرین سبربز انیشی ایٹو کا مقصد رہائشی کمیونٹیز میں معیار زندگی کو بلند کرنا، ایک متحرک کمیونٹی کی تعمیر، سعودی خاندانوں کے طرز زندگی کو بہتر بنانا، نئے محلوں میں ملکیت کی کشش، سعودی شہروں میں شہری منظر نامے کو بہتر بنانا اور پودوں کی فی کس آمدنی میں اضافہ کرنا شامل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں