مشرق وسطیٰ

شمالی غزہ خالی کرنے کی خطرناک اسرائیلی وارننگ، کیا زمینی حملے کا وقت آن پہنچا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسرائیلی فوج نے 24 گھنٹے کے اندر تمام 10 لاکھ سے زائد شہریوں کو شمالی غزہ چھوڑ کر جنوبی غزہ جانے کا الٹی میٹم دے دیا، جبکہ تل ابیب کے متوقع زمینی حملے سے قبل ٹینک غزہ کی پٹی کے قریب پہنچ گئے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے ’رائٹرز‘ کی رپورٹ کے مطابق اسرائیلی وزیردفاع یوآو گیلانٹ نے جمعرات کو کہا تھا کہ ’یہ جنگ کا وقت ہے‘، اسرائیل کی جانب سے غزہ پر بھاری بمباری جاری ہے، جس کے نتیجے میں 1300 سے زائد افراد جاں بحق ہو گئے، جس میں زیادہ تر شہری شامل ہیں۔

اسرائیلی فوج نے کہا کہ وہ آنے والے دنوں میں غزہ شہر میں ’نمایاں آپریشن‘ کریں گے اور شہری تبھی واپس جاسکیں گے جب بعد میں اعلان کیا جائے گا۔

اسرائیلی فوج نے بتایا کہ غزہ کے شہری اپنی اور اپنے خاندانوں کی حفاظت کے لیے جنوب چلے جائیں، اور خود کو حماس سے دور کر لیں، جو آپ کو انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کر رہے ہیں۔

حماس کے ایک حکام نے کہا کہ غزہ کی نقل مکانی کا انتباہ ’جعلی پروپیگنڈا‘ ہے اور شہریوں پر زور دیا کہ وہ اس کا شکار نہ ہوں۔

اقوام متحدہ نے کہا کہ ’تباہ کن انسانی نتائج کے بغیر‘ شہریوں کی نقل مکانی ناممکن ہے، جبکہ اقوام متحدہ میں اسرائیل کے سفیر گیلاد اردن نے غزہ کے رہائشیوں کو اسرائیل کی ابتدائی وارننگ پر اقوام متحدہ کے ردعمل کو ’شرمناک‘ قرار دیا۔

اسرائیلی فوج نے ایک بیان میں کہا کہ اس نے شمالی غزہ میں رات بھر 750 فوجی اہداف کو نشانہ بنایا، جن میں حماس کی سرنگیں، فوجی کمپاؤنڈز، سینئر کارکنوں کی رہائش گاہیں اور ہتھیاروں کے ذخیرہ کرنے والے گودام شامل ہیں۔

تباہ شدہ غزہ سے : رائیٹرز

رپورٹ میں مزید بتایا گیا کہ غزہ کی پٹی میں 23 لاکھ افراد رہائش پذیر ہیں، اسرائیلی حملوں میں اب تک 1500 سے زائد فلسطینی جاں بحق ہو چکے ہیں۔

انٹرنیشنل کمیٹی آف ریڈ کراس (آئی سی آر سی) نے کہا کہ غزہ کے ہسپتالوں میں ایمرجنسی جنریٹر کے لیے چند گھنٹوں میں ایندھن ختم ہو سکتا ہے، اور اقوام متحدہ کے ورلڈ فوڈ پروگرام (ڈبلیو ایف پی) نے خبردار کیا ہے کہ خوراک اور تازہ پانی خطرناک حد تک کم ہو رہا ہے۔

آئی سی آر سی کے ریجنل ڈائریکٹر فیبریزیو کاربونی نے کہا کہ بڑھتی کشیدگی سے انسانوں کو سنگین مصیبت درپیش ہے، اور میں فریقین سے درخواست کرتا ہوں کہ وہ شہریوں کی تکالیف کو کم کریں۔

اقوام متحدہ کی فلسطین میں ریلیف اینڈ ورکس ایجنسی (اونروا) نے کہا کہ اس نے اپنے مرکزی آپریشنز سینٹر اور بین الاقوامی عملے کو غزہ کے جنوب میں منتقل کر دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں