فضائی کارروائیوں کا دائرہ بڑھانے کے لیے امریکی جنگی طیارے خطے میں پہنچ گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکی فوج نے آج بروز ہفتہ جنگی طیاروں کی سنٹرل کمانڈ کے زیر نگین علاقے میں آمد کا اعلان کیا ہے جس کا مقصد مشرق وسطیٰ کے علاقے میں فضائی کارروائیوں کو تقویت دینا ہے۔

امریکی سینٹ کام کے عہدیداروں کی آمد

’یو ایس‘ سینٹرل کمانڈ نے ایکس پلیٹ فارم (سابقہ ٹویٹر) پر کہا کہ "F-15E اسٹرائیک ایگل حملہ آور طیارہ جس کا تعلق 494 ویں ایکسپیڈیشنری فائٹر سکواڈرن سے ہے امریکی سینٹرل کمانڈ کے زیر نگین علاقے میں پہنچا ہے"

یہ کمک پورے مشرق وسطیٰ میں امریکی پوزیشننگ اور فضائی کارروائیوں کو مضبوط کرنے کے لیے بھجوائی جا رہی ہے۔

طیارہ بردار جہاز کی منتقلی

گذشتہ پیر کو امریکا نے اعلان کیا کہ وہ ایک طیارہ بردار بحری جہاز اور فضائی جنگی طیارے مشرقی بحیرہ روم کے علاقے میں منتقل کیے ہیں۔ نیز وہ اسرائیل کو مزید ساز وسامان اور گولہ بارود فراہم کرے گا۔

یہ پیش رفت حماس کے اسرائیل پر حملے کے بعد سامنے آئی ہے جسے امریکی صدر جو بائیڈن نے "خوفناک اور عدیم النظیر جارحیت" قرار دیا ہے۔

امریکی وزیر دفاع لائیڈ آسٹن نے کہا کہ ’یو ایس ایس‘ جیرالڈ آر فورڈ طیارہ بردار بحری جہاز کروز میزائل اور چار میزائل ڈسٹرائر امریکی فضائی جنگی طیارے بھیجنے کے علاوہ خطے کی طرف بڑھ رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں