مشرق وسطیٰ

فلسطینیوں کو غزہ سے بے دخل کرنا 'ریڈ لائن' ہو گا: وزیر خارجہ اردن

معصوم فلسطینیوں کے قتل عام اور جنگ کو جاری رکھنے سے پورا خطہ جنگ کی جہنم میں چلا جائے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اردن نے خبر دار کیا ہے کہ اسرائیل نے فلسطینیوں کو غزہ اور ان کے علاقے سے بے دخل کرنے کی کوشش کی تو اس کا مطلب خطے کو ایک بڑے تصادم میں میں دھکیلنا ہو گا۔

وزیر خارجہ اردن ایمن صفادی نے یہ بھی کہا اسرائیل غزہ کا فوجی محاصرہ کر کے انسانی بنیادوں پر غزہ کے مکینوں کو بھیجی جانے والی خوراک ادویات اور دیگر انتہائی بنیادی ضرورتوں میں رکاوٹ پیدا کر رہا ہے تاکہ اہل غزہ کو غزہ سے نکال باہر کرے۔ اسرائیل کی یہ کارروائیاں بین الاقوامی قوانین کی واضح خلاف ورزی ہیں۔

واضح رہے اسرائیل نے غزہ کے شمالی حصے کی ساری آبادی کو ہفتے کی صبح ڈیڈ لائن دی ہے کہ وہ غزہ سے نکل کر جنوب کی طرف نقل مکانی کر جائیں۔ توقع کی جارہی ہے کہ اسرائیل ایک اور بڑا حملہ کرنے والا ہے، البتہ یہ حملہ فضائی نہیں زمینی ہونے کی توقع ہے۔

اسرائیل نے اس مقصد کے لیے چار بجے شام تک کے لیے دو سڑکیں کھول دی ہیں تاکہ فلسطینی غزہ کو چھوڑ کر جنوب کی طرف نقل مکانی شروع کر دیں۔

ایمن صفادی نے کہا ' اسرائیل کی حماس کے خلاف مہم درحقیقت عام اور معصوم شہریوں کے قتل عام کی کوشش ہے۔ اس رائیل کی اس مہم کے نتیجے میں بد امنی اور تباہی آئے گی اور اس کے نتیجے میں اسرائیل کو خود بھی تحفظ کے مسائل کا سامنا کرنا پڑے گا۔

وزیر خارجہ اردن نے کینیڈین وزیر خارجہ کے ساتھ اپنی ملاقات کے بعد کہا غزہ میں اسرائیل کے ہاتھوں معصوم فلسطینی شہریوں کے قتل عام کے خطے اور دنیا کو مضمرات بھگتنا پڑیں گے۔

اس طرح کی بمباری ، نقل مکانی کی کوشش اور قتل عام سے امن ملے گا نہ امن کا راستہ ملے گا۔ خیال رہے جاری جنگ کے بعد اردن کی طرف سے یہ سب سے زیادہ سخت زبان میں گفتگو سامنے آئی ہے۔

صفادی نے اسرائیل کی طرف سے فلسطینیوں کو اپنے گھر چھوڑ کر نقل مکانی پر مجبور کرنے کی کوشش کو ' ریڈ لائن ' سے تعبیر کیا اور کہا اس سے خطہ جنگ کی جہنم میں تبدیل ہو جائے گا۔ اس لیے ہمیں اس پاگل پن کو ختم کرنا ہو گا۔ کیونکہ جنگ کا جاری رکھا جانا اسے کئی دوسرے محاذوں تک پھیلا دے گا۔ نتیجہ مزید تشدد اور تباہی ہو گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں