فلسطین اسرائیل تنازع

اسرائیلی ایمرجنسی حکومت کا اجلاس، نیتن یاھو کی حماس کو ’پاش پاش‘ کرنے کی دھمکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو نے اتوار کو ہنگامی حکومت کا پہلا اجلاس منعقد کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ نظر آنے والا قومی اتحاد اندرون اور بیرون ملک ہر ایک کے لیے پیغام ہے کہ ہم نے ’حماس‘ کو پاش پاش کرنے کا عزم کیا ہے۔

اپوزیشن کے سابق قانون ساز بینی گانٹز کا ایمرجنسی حکومت میں خیرمقدم کرتے ہوئے نیتن یاہو نے کہا کہ تمام وزراء "متحدہ محاذ کے ساتھ چوبیس گھنٹے کام کر رہے ہیں"۔

نیتن یاہو نے مزید کہا کہ "حماس کا خیال تھا کہ ہم تباہ ہو جائیں گے۔ مگر اسے معلوم ہونا چاہیے کہ اس کی تباہی کا وقت آگیا ہے، ہم نے حماس کوٹکڑے ٹکڑے کرنے کا عزم کررکھا ہے۔

انہوں نےبات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ ہمیں اتحاد کا مظاہرہ کرتے ہوئے قوم، دشمن اور دنیا کو واضح پیغام دینا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ"اسرائیلی فوج جانتی ہے کہ پورا ملک ان کے پیچھے کھڑا ہے اور انہیں احساس ہے کہ یہ بدترین گھڑی ہے۔"

نیتن یاھو کا دھمکی آمیز پیغام ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب اسرائیل آج غزہ کی پٹی پر زمینی حملے کے لیے اپنی تیاری جاری رکھے ہوئے ہے۔

ہفتے کے روز شمالی غزہ کی پٹی کے مکینوں کو علاقے سے انخلاء کے لیے اضافی وقت دیا گیا تھا۔

غزہ شہر کے پورے محلے ملبے کا ڈھیر بن چکے ہیں۔ ہسپتالوں میں ہزاروں زخمیوں کا رش بڑھ رہا ہے جس سے حالات مزید خراب ہونے کا خدشہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں