غزہ سے یرغمالیوں کی لاشیں ملی ہیں: اسرائیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے اعلان کیا ہے اس ہفتے غزہ کے اندر کارروائیوں کے دوران حماس کے ارکان کے ہاتھوں یرغمال بنائے گئے کچھ افراد کی لاشیں ملی ہیں۔

فوج کے ترجمان لیفٹیننٹ کرنل پیٹر لرنر نے صحافیوں کو بتایا کہ ہم نے غزہ کی پٹی کے ایک علاقے سے اغوا کیے گئے کچھ اسرائیلیوں کی لاشیں تلاش کیں اور انہیں ڈھونڈ لیا۔

ہفتہ کی شام حماس کے ہاتھوں اسرائیلی یرغمالیوں کے اہل خانہ نے ایک اپیل کی ہے جس کا مقصد آدھی رات تک ایک معاہدے پر پہنچنا ہے۔ رشتہ داروں نے کہا ہے کہ سات دنوں سے زیر حراست یرغمالیوں کو فوری طور پر دوائیں فراہم کی جائیں۔

تل ابیب میں یرغمالیوں اور لاپتہ افراد کے خاندانوں کے فورم کے سربراہ رونن زور نے کہا کہ ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ یرغمالیوں کو ادویات کی منتقلی کے لیے آدھی رات تک ایک معاہدہ طے پا جائے۔ انہوں نے مزید کہا ہمیں آج رات انٹرنیشنل کمیٹی آف ریڈ کراس سے جواب ملنے کی امید ہے۔

اسرائیلی ایسوسی ایشن آف پبلک ہیلتھ فزیشنز جو خاندانوں کے ساتھ تعاون کرتی ہے کے سربراہ ہاگائی لیون نے تل ابیب میں مشترکہ پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ 150 ایسے قیدی ہیں جو صحت کے مسائل کا شکار ہیں جنہیں فوری طور پر جان بچانے کی ادویات کی ضرورت ہے۔

رونن زور نے کہا کہ اگر یرغمالیوں کو وہ دیکھ بھال نہیں ملتی جس کی انہیں ضرورت ہے تو اسرائیل کو اپنے حماس کے قیدیوں کو طبی امداد سے محروم کر دینا چاہیے۔ اسرائیلی جیلوں میں حماس کے قیدی موجود ہیں جنہیں بہترین طبی امداد دستیاب ہے۔ اگر کوئی چارہ نہیں ہے تو ہمیں کھیل کے قوانین کو تبدیل کرنا چاہیے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں