غزہ میں شہریوں کی حفاظت کی ذمہ دار حماس ہے: نیتن یاھو کی ڈھٹائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ کی پٹی میں اسرائیل اور فلسطینی دھڑوں کے درمیان غیر معمولی کشیدگی کے گیارہویں دن اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو نے جنگ کے لیے وسیع بین الاقوامی حمایت کا مطالبہ کردیا۔ نیتن یاہو نے جرمن چانسلر اولاف شولز سے ملاقات کی اور کہا دنیا کو حماس کو شکست دینے کے لیے اسرائیل کے پیچھے متحد ہونا چاہیے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ موجودہ جنگ تنہا ان کے ملک کی جنگ نہیں ہے۔ اب ہر کوئی حماس کو دیکھ رہا ہے کہ یہ کیا ہے۔ حماس غزہ میں شہریوں کے تحفظ کی ذمہ دار ہے۔ ان میں اسرائیلی اور فلسطینی یرغمال بھی شامل ہیں۔ جرمن چانسلرز شولز نے اعلان کیا کہ انہوں نے نیتن یاہو کے ساتھ بات چیت کی ہے کہ محصور غزہ کی پٹی میں شہریوں تک انسانی امداد کیسے پہنچائی جائے۔ میں اس معاملے پر مصری صدر سے بھی بات کروں گا۔

انہوں نے کہا میں نے اسرائیلی وزیر اعظم سے غزہ کے لوگوں کو جلد از جلد انسانی امداد پہنچانے کے طریقوں کے بارے میں تبادلہ خیال کیا ہے۔ ہم شہریوں کی حفاظت کرنا اور ان میں اموات کو روکنا چاہتے ہیں۔

واضح رہے 7 اکتوبر کو حماس کے اسرائیل پر اچانک حملے کے بعد جنگ شروع ہوگئی تھی۔ اسرائیل نے شمالی غزہ کی نصف آبادی پر زور دیا ہے کہ وہ ہجرت کرکے غزہ کی پٹی کے جنوب میں چلے جائیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں