فلسطین اسرائیل تنازع

ہسپتال پر اسرائیلی حملہ عالم عرب میں مذمت اور غم و غصے کا طوفان برپا

اسرائیل سے سفارتی تعلقات والے ملک بھی مذمت میں پیش پیش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

غزہ کے الاھلی ہسپتال پر اسرائیلی حملے کے بعد پورے عالم عرب کے ساتھ ساتھ دیگر ممالک میں بھی غم و غصے کا ایک طوفان برپا ہو گیا ہے۔ اسرائیل کے ہسپتال پر حملے کے بعد اس کے تردیدی بیان کو کسی بھی عرب ملک نے تسلیم نہیں کیا ہے اور کہا ہے کہ اسرائیل کی طرف سے یہ حملہ دانستہ طور پر کیا گیا ہے۔

سعودی عرب کے علاوہ ان عرب ملکوں نے بھی ہسپتال پر اسرائیلی حملے کی سخت مذمت کی ہے جنہوں نے ابراہم معاہدے کے بعد یا پہلے سے اسرائیل کو تسلیم کر رکھا ہے اور اسرائیل کےساتھ سفارتی تعلقات بھی قائم کر رکھے ہیں۔

اسرائیل کی مذمت کرنے والے ملکوں میں متحدہ عرب امارات، اردن بحرین، مراکش ، مصر اور ترکی بھی شامل ہیں۔ حتی کہ اسرائیل کے اتھادی ملکوں نے بھی اسرائیلی حملے کی مذمت کی ہے اور اسے کسی بھی طرح ناقابل قبول قرار دیا ہے۔

دوسرے ملک جنہوں نے اسرائیل کی بھر پور انداز میں مذمت کی ہے ان میں لیبیا ، یمن ، تیونس اور عراق بھی شامل ہیں۔ ادھر مغربی کنارے میں بدھ کے روز کو "غصے کا دن" کے طور پر منایا گیا اور جگہ جگہ ریلیوں کا اہتمام کیا گیا۔ ۔

اسرائیل کی فوج نے اگرچہ اس حملے کی ذمہ داری قبول کرنے سے انکار کیا ہے لیکن کسی بھی ملک نے اس کے موقف کو تسلیم نہیں کیا ہے۔ متحدہ عرب امارات کی سرکاری خبر رساں ایجنسی 'ڈبلیو اے ایم' کے مطابق امارات نے اسرائیل کی سخت مذمت کی ہے اور ہسپتال حملے میں سینکڑوں افراد کی ہلاکت کو اسرائیلی حملے کا نتیجہ قرار دیا ہے۔

بحرین کی وزارت خارجہ نے بحرین کی طرف سے اسرائیلی بمباری کی مذمت کی ہے۔ مراکش جس نے حالیہ برسوں میں اسرائیل کو تسلیم کر کے اس سے سفارتی تعلقات قائم کر لیے تھے ، اس نے بھی اسرائیل کی مذمت کی ہے۔

ادھر اہم عرب افریقی ملک مصر کے صدر السیسی نے اسرائیل کی پرزور الفاظ میں مذمت کی ہے سینکڑوں معصوم جانوں کی موت کا ذمہ دار اسرائیل کو قرار دیا ہے۔ صدر السیسی نے ہسپتال پر اسرائیلی بمباری کو بین الاقوامی قوانین کی کھلی خلاف ورزی قرار دیا ہے۔

سعودی عرب نے ہسپتال کو نشانہ بنانے کو اسرائیل کی طرف سے سنگین ترین جرم قرار دیا۔

جنگی جرائم

اردن کے شاہ عبداللہ نے ہسپتال پر اسرائیلی حملے کو جنگی جرم قرار دیا ہے۔ او آئی سی نے اس حملے کو انسانیت کے خلاف حملہ قرار دیا ۔ اسی طرح عرب امارات سمیت تمام خلجی ملکوں نے اس واقعے کی مذمت کی اور کہا ہے یہ واضح طور پر اسرائیل کے سنگین ترین حملوں میں سے ایک حملہ ہے۔اور اس بات کا ثبوت ہے کہ اسرائیل سنگین جنگی جرائم میں ملوث ہے۔

عرب لیگ کے رہنما نے منگل کے روز کہا ان المیوں کو اب رکنا چاہیے۔ ایرانی حمایت یافتہ حزب اللہ نے بدھ کے روز کو ہسپتال حملے کے سبب اسرائیل کے خلاف غصہ کا دن منانے کا اعلان کیا تھا۔ اس سلسلے میں مغربی کنارے کے علاوہ بھی بڑی ریلیوں کا اہتمام کیا گیا۔

اسرائیلی مذمت کرنے والوں میں الجیریا اور قطر بھی شامل ہیں۔ او آئی سی کے ممبر ملکوں نے بھی اس انتہائی انسانیت سوز واقعے کی بھر پور مذمت کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں