فلسطین اسرائیل تنازع

غزہ کے تنازع کے پھیلنے کا خطرہ حقیقی ہے: اقوام متحدہ کا انتباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اقوام متحدہ کے مشرق وسطیٰ کےلیے امن مندوب نے بدھ کے روز سلامتی کونسل کو متنبہ کیا ہے کہ غزہ کی پٹی میں اسرائیل اور حماس کے درمیان تنازع کے پھیلنے کا خطرہ "بہت حقیقی اور بہت خطرناک ہے"۔

دوحا سے ویڈیو کال کے ذریعے 15 رکنی کونسل سے خطاب کرتے ہوئے مشرق وسطیٰ کے امن عمل کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی کوآرڈینیٹر ٹور وینس لینڈ نے مزید کہا کہ "مجھے خدشہ ہے کہ ہم ایک گہری اور خطرناک کھائی کے دہانے پر ہیں جو راستے کو بدل سکتی ہے۔ اسرائیل ۔ فلسطین تنازعہ پورے مشرق وسطیٰ کو اپنی لپیٹ لے سکتا ہے۔

امریکا کا ویٹو پاور کا استعمال کیا

یہ بیانات ایسے وقت میں سامنے آئے ہیں جب امریکا نے بدھ کے روز اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں اسرائیل اور حماس کے درمیان تنازعہ میں انسانی ہمدردی کی بنیاد پر جنگ بندی کا مطالبہ کرنے والی قرارداد کے خلاف اپنا ویٹو پاور استعمال کیا تھا۔ امریکی ویڈیو کے بعد غزہ میں امداد کی فراہمی یقینی بنانے کی عالمی سفارتی کوشش ناکام ہوگئی تھی۔

غزہ میں امداد کے داخلے میں امریکا کی ثالثی کی کوشش میں برازیل کی طرف سے تیار کردہ متن پر گذشتہ دو دنوں میں ووٹنگ دو بار ملتوی کی گئی۔

بدھ کو بارہ ارکان نے مسودے کے متن کے حق میں ووٹ دیا جبکہ روس اور برطانیہ نے ووٹنگ میں حصہ نہیں لیا۔

ہسپتال کی تباہی

یہ پیش رفت ایک ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب امریکی صدر جو بائیڈن نے اسرائیل کا دورہ کیا تھا، جہاں انہوں نے اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو سے ملاقات کی تھی۔ امریکی صدر کا یہ دورہ 7 اکتوبر کو حماس کے اچانک حملے کے بعد فلسطینی دھڑوں اور اسرائیلی افواج کےچھڑنے والی جنگ کے تناظر میں سامنے آیا ہے۔

قبل ازیں اسرائیلی فوج نے منگل کو غزہ کے ایک بڑے ہسپتال پر بمباری کی تھی جس کے نتیجے میں پانچ سو فلسطینی جن میں زیادہ تر بچے اور خواتین تھے شہید ہوگئے تھے۔

اسرائیلی فوج نے اسلامی جہاد موومنٹ پر ہسپتال کی طرف میزائل داغنے کا الزام عاید کیا تاہم اسلامی جہاد نے یہ دعویٰ مسترد کردیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں