مشرق وسطیٰ

اسرائیل نے غزہ کے القدس ہسپتال کو بھی نشانہ بنانے کی دھمکی دے دی: فلسطینی ہلال احمر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

فلسطینی ہلال احمر نے آگاہ کیا ہے کہ اسرائیل نے غزہ کے ایک اور ہسپتال پر حملہ کرنے کی دھمکی دی ہے۔ ہلال احمر کے مطابق حالیہ دھمکی القدس ہسپتال پر حملے سے متعلق ہے۔ اسرائیل نے دھمکی دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہسپتال کو فوری خالی کر دیا جائے۔

واضح رہے القدس ہسپتال جس پر اسرائیلی فضائیہ بمباری کرنے کی تیاری کر چکی ہے 400 مریض اور زخمی فلسطینی ہیں، جبکہ بمباری سے بے گھر ہو جانے والے 12000 فلسطینیوں کو الگ سے پناہ دی گئی ہے۔ یہ ہسپتال غزہ کے شمالی حصے میں واقع ہے۔

ہلال احمر کی طرف سے کہا گیا ہے کہ اسرائیل کو بتا دیا ہے گیا ہے کہ القدس ہسپتال میں داخل کیے گیے زخمی اور مریض اس وقت سخت مشکل صورت حال سے دوچار ہے، وجہ ادویہ اور دیگر طبی ضروریات کی عدم دستیابی جبکہ زخمیوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہے۔

ہلال احمر کے حکام کے مطابق اسرائیلی حملے کی دھمکی ملنے کے بعد بین الاقوامی برادری کو آگاہ کر دیا گیا ہے کہ فوری طور اسرائیلی حملے کو روکنے کے اقدامات کرے تاکہ ایک اور ہسپتال قتل گاہ نہ بنایا جا سکے۔

جیسا کہ اس سے پہلے الاھلی المعمدانی ہسپتال کو اسرائیلی بمباری سے زخمیوں ، مریضوں اور ڈاکٹروں سمیت ملبے کا ڈھیر بنا دیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں