اسرائیل کی اپنے شہریوں سے فوراً مصر، اردن چھوڑنے کی اپیل

مصر کے لیے سفری ہدایات بھی جاری، سفری انتباہات کو 4 کی سطح تک بڑھا دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

قومی سلامتی کونسل نے ہفتے کے روز کہا کہ اسرائیل نے اپنے شہریوں پر زور دیا ہے کہ وہ فوری طور پر مصر اور اردن سے نکل جائیں کیونکہ غزہ میں جنگ کے حوالے سے علاقائی کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے۔

ایک بیان میں کہا گیا: "اسرائیل کی قومی سلامتی کونسل نے مصر (بشمول سینا) اور اردن کے لیے سفری انتباہات کو 4 (بلند خطرہ) کی سطح تک بڑھا دیا ہے: ان ممالک کا سفر نہ کرنے اور وہاں رہنے والوں کو جلد از جلد وہاں سے نکل جانے کی سفارش کی گئی ہے۔"

یہ نوٹس اس وقت سامنے آیا ہے جب اسرائیل نے اپنے شہریوں کو بھی ملک چھوڑنے کی پہلے سے درخواست کے بعد حفاظتی اقدام کے طور پر ترکی سے اپنے سفارت کاروں کو واپس بلا لیا تھا۔

انخلاء کے مطالبات غزہ کی پٹی پر اسرائیل کی بمباری کے خلاف شرقِ اوسط میں کئی دنوں سے جاری مظاہروں کے بعد سامنے آئے ہیں۔

اسرائیلی حکام کے مطابق حماس کے عسکریت پسندوں کے غزہ کی پٹی سے اسرائیل میں داخل ہونے کے بعد جنگ شروع ہوئی جس میں 200 سے زیادہ یرغمال بنا لیے گئے اور کم از کم 1,400 افراد کو ہلاک کر دیا جن میں زیادہ تر عام شہری تھے۔ انہیں گولی مار کر، مسخ کر کے یا جلا کر مارا گیا۔

اسرائیل نے اس کے بعد حماس کو تباہ کرنے کا عزم کیا ہے اور اس کے جواب میں شروع کی گئی بمباری مہم نے غزہ کے پورے شہر کو مسمار کر دیا ہے جس میں حماس کے زیرِ انتظام وزارتِ صحت کے مطابق اب تک 4,137 فلسطینی ہلاک ہو گئے ہیں جن میں زیادہ تر عام شہری تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں