اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی پر حملوں کو تیز کرنے کا اعلان کردیا

حماس کے عسکری ونگ کے رہنما طلال الہندی جاں بحق ہوگئے: فلسطینی میڈیا کی تصدیق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے ہفتے کی شام اعلان کردیا کہ وہ حماس کے زیر کنٹرول غزہ کی پٹی پر اپنے حملے کے اگلے مرحلے کی تیاری کے لیے غزہ پر اپنے حملوں کو تیز کرنے جا رہی ہے۔

اسرائیلی فوج کے ترجمان جنرل ڈینیل ہگاری نے کہا کہ ہمیں جنگ کے اگلے مرحلے میں بہترین ممکنہ حالات میں داخل ہونا چاہیے۔ آج سے ہم حملوں کو تیز کر رہے اور خطرے کو کم کر رہے ہیں۔ فوج نے کہا کہ شمالی اسرائیل کی بمباری میں ایک اسرائیلی فوجی ہلاک اور دو زخمی ہوئے ہیں۔

غزہ میں اسرائیلی فوج اور فلسطینی گروپوں کے درمیان جنگ ہفتے کے روز 15 ویں بھی جاری رہی۔ ایک اسرائیلی پمفلٹ میں شمالی غزہ کے رہائشیوں کو متنبہ کیا گیا کہ جو کوئی بھی اس علاقے میں قیام کا انتخاب کرے گا اسے دہشت گرد قرار دیا جا سکتا ہے۔ اس سے قبل اسرائیلی فوج نے غزہ میں حماس کے ٹھکانوں پر راکٹ لانچروں کے ذریعہ چھاپوں کا اعلان کیا تھا۔

فلسطینی وزارت صحت نے ہفتہ 21 اکتوبر کو اطلاع دی ہے کہ غزہ پر اسرائیلی حملوں کے نتیجے میں 24 گھنٹوں کے اندر 352 افراد جاں بحق ہوئے ہیں۔ اس لڑائی میں 15 روز کے دوران 4385 فلسطینی شہید ہو چکے ہیں۔ ان شہدا میں 1756 بچے اور 967 خواتین شامل ہیں۔ اس کے علاوہ 13561 فلسطینی زخمی ہیں۔

دوسری جانب القسام بریگیڈز نے ہفتے کے روز اعلان کیا کہ وہ تل ابیب اور وسطی اسرائیل کو نئے راکٹوں سے نشانہ بنا رہا ہے۔

اسرائیلی حکام کے مطابق حماس کے ساتھ جنگ کے آغاز سے اب تک اسرائیل کی جانب سے 1400 سے زائد افراد ہلاک اور 4600 زخمی ہو چکے ہیں۔ اسرائیلی فوج نے کہا کہ حماس کے 1500 افراد ان علاقوں پر دوبارہ کنٹرول حاصل کرنے کے لیے جوابی حملے میں مارے گئے جن میں حماس کے ارکان داخل ہوئے تھے۔ اسرائیلی فوج کے مطابق حماس نے تقریباً 210 اسرائیلی افراد کو یرغمال بنا لیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں