حجاب کے خلاف سابقہ احتجاج ۔۔۔ زخمی ہونےوالی 16 سالہ امریتا گیراوند کومےمیں چلی گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایرانی سرکاری میڈیا نے نوجوان لڑکی امریتا گیراوند کے صحت کے بارے میں رپورٹ کیا ہے وہ کوما میں جاچکی ہے۔ امریتا گیراوند حجاب کے معاملے میں قانون کے خلاف احتجاج کے دوران زخمی ہونے کے بعد کوما میں چلی گئی تھی۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق اس کی دماغی موت ہو چکی ہے۔

لڑکی کی صحت کے بارے میں 'فالو اپ رپورٹ' کے مطابق ایرانی کے طبی عملے کی تمام تر کوششوں کے باوجود اسکی دماغی اعتبار سے موت واقع ہو چکی ہے۔

انسانی حقوق سے متعلق ایک گروپ نے اسی ماہ اکتوبر میں بتایا تھا کہ سولہ سالہ گیراوند تہران میں احتجاج کے دروان ایک سب وے حملے کے موقع پر زخمی ہو گئی تھی۔

کردوں کے حقوق پر فوکس رکھنے والے ایک گروپ ہنگاو کے مطابق گیراوند احتجاج کے دوران بری طرح زخمی ہو گئی تھی۔ یہ واقعہ ایران کی اخلاقی پولیس کے ساتھ ایک مڈبھیڑ کے دوران پیش آیا تھا۔

تاہم ایرانی حکام کا پہلے سے موقف ہے کہ لڑکی کم فشارخون کے سبب بے ہوش ہو گئی تھی۔ اس معاملے میں سیکورٹی فورسز کا کوئی کردار نہیں تھا۔

ایرانی حکام مہسا امینی کی ستمبر 2022 میں پولیس حراست میں ہلاکت کے بعد سے مسلسل چوکسی پوزیشن میں ہے ۔ مہسا امینی کی ہلاکت کے بعد ایک لمبا احتجاجی سلسلہ چلا تھا جس میں سینکروں لوگ مارے گئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں