محمد بن سلمان کی ریاض میں امریکی سینیٹر لنڈسے گراہم سے ملاقات

دو طرفہ تعلقات اور غزہ پر تبادلۂ خیال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی سرکاری خبر رساں ایجنسی ایس پی اے نے اطلاع دی کہ سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے ہفتے کے روز ریاض میں امریکی سینیٹر لنڈسے گراہم سے ملاقات کی جہاں دونوں نے دو طرفہ تعلقات اور اسرائیل-غزہ تنازعہ پر تبادلۂ خیال کیا۔

ایس پی اے کے مطابق ملاقات کے دوران دونوں نے "مشترکہ دلچسپی" کے دیگر امور کے علاوہ غزہ میں جاری فوجی کشیدگی پر تبادلۂ خیال کیا۔

ولی عہد نے غزہ میں کشیدگی کو ختم کرنے کی ضرورت پر روشنی ڈالی تاکہ تشدد مزید نہ پھیلے اور خطے اور دنیا کی سلامتی اور امن پر کوئی اثرات نہ ہوں۔

دی حکام اور امریکی سینیٹرز کے وفد کے درمیان 21 اکتوبر 2023 کو ریاض میں ملاقات۔ (ایس پی اے)
دی حکام اور امریکی سینیٹرز کے وفد کے درمیان 21 اکتوبر 2023 کو ریاض میں ملاقات۔ (ایس پی اے)

محمد بن سلمان نے اس بات پر بھی زور دیا کہ فلسطینی عوام کو ان کے جائز حقوق ملنے کی ضمانت دینے کے لیے امن عمل کو دوبارہ شروع کر کے غزہ میں استحکام کو بحال کیا جائے۔

ریاض میں ہونے والی میٹنگ میں دیگر دو طرفہ امریکی حکام بھی شریک تھے۔

امریکی وفد کی قیادت ریپبلکن پارٹی کے گراہم کر رہے تھے جنہوں نے 7 اکتوبر کو اسرائیل پر حماس کے حملے کے بعد شرقِ اوسط میں ہونے والی تازہ ترین پیش رفت پر بات چیت کے لیے سفر کیا۔

گراہم کے دفتر نے جمعہ کو کہا، "خلیجی خطے کے استحکام، سلامتی اور خوشحالی کے تحفظ میں امریکہ اور سعودی عرب کا مشترکہ مفاد ہے اور یہ وسیع علاقائی اور عالمی مسائل پر قریبی مشاورت کرتے ہیں۔ خطے کے پرامن اور خوشحال مستقبل کے لیے کام کرنے میں سعودی عرب اہم کردار ادا کرتا ہے۔"

اس دورے میں شریک قانون سازوں میں رچرڈ بلومینتھل، کوری بکر، کیٹی برٹ، بین کارڈن، سوسن کولنز، کرس کونز، جیک ریڈ، ڈین سلیوان اور جان تھیون شامل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں