’غزہ میں میڈیا سچائی کا قاتل‘ الجزائرکے تمام اخبارات کے صفحہ اول پر ایک ہی سرخی

اقدام کا مقصد غزہ میں مغربی میڈیا کے فلسطینیوں کے خلاف تعصب اور اسرائیلی ریاست کے جرائم پر پردہ ڈالنے کی مذموم مہم کا پردہ چاک کرنا ہے۔

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
5 منٹس read

الجزائر میں گذشتہ جمعرات کو ملک کی تمام بڑی سیاسی اور سماجی جماعتوں کی اپیل پر ملک کے پچاس سے زائد شہروں میں وسیع پیمانے پر فلسطینیوں کی حمایت میں ریلیاں نکالی گئیں جن میں لاکھوں باشندوں نے شرکت کی تھی۔

آج اتوار کے روز الجزائر کے اخبارات نے مظلوم فلسطینیوں کے ساتھ منفرد اندازمیں یکجہتی کا اظہار کرنے کے ساتھ ساتھ مغربی پریس کے دوغلے پن کے خلاف احتجاج کیا ہے۔

الجزائر کے تقریبا تیس سے زائد اخبارات نے ایک تصویر اور الفاظ کے ساتھ تیار کردہ سرخی کو جلی الفاظ میں شائع کرکے فلسطینیوں سے یکجہتی کا اظہار کیا ہے۔

اخبار مالکان کا کہنا ہے کہ اس اقدام کا مقصد یہ پیغام دینا ہے کہ ہم غزہ کی پٹی میں ہونے والے اسرائیلی جرائم پر یک آوازہیں اور ہم مغربی میڈیا کے حقائق کو چھپانے اوراسرائیل کی حمایت میں جھوٹے پروپیگنڈے کو مسترد کرتے ہیں۔

اس ضمن میں الجزائر کے 30 سے زائد اخبارات نے آج کے شمارے کے لیے اپنے صفحہ اول کو اتوار کے روز "غزہ...میڈیا سچائی کا قتل کر رہا ہے" عنوان ایک ہی سرخی شائع کرکے فلسطینیوں سے اپنی حمایت کا اظہارکیا ہے۔

اس اقدام کو الجزائر کے پریس کی تاریخ میں اپنی نوعیت کا پہلا واقعہ شمار کیا جاتا ہے۔ اس کا مقصد فلسطین کی حمایت، مقبوضہ علاقوں میں صحافیوں کے ساتھ یکجہتی،اسرائیلی فوج کی وحشیانہ کارروائیوں کی مذمت، پیشہ ورانہ اور انسانی موقف کا اظہار اور مغربی میڈیا کی طرف سے دکھائے جانے والے تعصب اور طرف داری پرمبنی مناظر کے خلاف میڈیا کی آوازوں کو یکجا کرنا ہے۔

الجزائر میں پبلشرز سنڈیکیٹ کے سربراہ ریاض ہویلی نے الجزائر میں میڈیا کو بتایا کہ "ہمیں یہ قدم اس لیے اٹھانا پڑا کیونکہ اس وقت غزہ کی پٹی پر مغرب ہر اعتبار سے نا انصافی اور ظلم کررہا ہے۔ ہم نے حقائق کو مسخ کرنے والے عرب میڈیا کے بلیک آؤٹ کے خلاف خاص طور پر فلسطین، کے خلاف انصاف کے مقاصد کی خدمت اور حمایت کے لیے یہ اقدام کیا ہے۔

اس اقدام میں حصہ لینے والے پبلشرز نے ایک مذمتی بیان جاری کیا جس میں انہوں نے اسرائیلی فوج کی جانب سے غزہ کے نہتے لوگوں کے بڑے پیمانے پر وحشیانہ بمباری میں قتل عام کی مذمت کی ہے۔ مغربی میڈیا نے غزہ پر جنگ کی اپنی جانبدارانہ کوریج اور حقائو کو مسخ کرکے صہیونی ریاست کو مظلوم بنا کر پیش کرنے کا جھوٹا پروپیگنڈہ شروع کیا ہے۔ وہ رائے عامہ کو گمراہ کرنے کے لیے حقائق کو جھوٹا بنا کر جھوٹی پروپیگنڈہ مشین بن گیا ہے۔ مغربی میڈیا اسرائیلی فوج کے سیاسی اور فوجی جرائم سند جواز پیش کررہا ہے‘‘۔

الجزائر کے اخبارات مالکان پبلشروں کا خیال ہے کہ مغربی میڈیا سیاست دانوں اور فوج کے جھوٹ کو فروغ دے کر یا ان کے لیے جھوٹ گھڑ کر اس جنگ کا ایک فریق اور اس میں ایک اہم کھلاڑی بن گیا ہے۔ مغربی میڈیا کی آنکھوں پر تعصب کی پٹی بندھی ہوئی ہے۔

پبلشرز نے صحافیوں اور مغربی میڈیا کے اہلکاروں سے مطالبہ کیا کہ "کم سے کم پیشہ ورانہ مہارت کا استعمال کریں جو سچ کا دوسرا رخ دکھائے"

الجزائر کے سوشل میڈیا پر’ہیش ٹیگ #AllAlgeria_media_with_Gaza ٹاپ ٹرینڈ کررہا ہے۔

یہ اقدام قومی پریس ڈے کے ساتھ مل کر کیا گیا جو الجزائرمیں ہر سال 22 اکتوبر کومنایا جاتا ہے۔

اس تناظر میں الجزائر کے صدر عبدالمجید تبون نے ہفتے کے روز مصر کے العریش ہوائی اڈے پر اہم اور فوری انسانی امداد بھیجنے کا حکم دیا تاکہ اسے رفح کراسنگ کے ذریعے غزہ کی پٹی تک پہنچایا جائے۔

صدارتی بیان کے مطابق الجزائر کی امداد میں خوراک، طبی سامان، کپڑے اور خیمے شامل ہیں۔ اسے ایئر فورس کے طیاروں پر مشتمل ایک ایئر برج کے ذریعے پہنچایا جائے گا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ "یہ فوری امداد الجزائر کی قیادت اور عوام کے برادر فلسطینی عوام کے ساتھ غیر مشروط اور لامحدود یکجہتی کے عزم کا اظہار ہے، جو ایک جامع اور غیر منصفانہ محاصرے کے تحت مسلسل جارحیت کا شکار ہیں۔"

قابل ذکر ہے کہ الجزائر کے باشندے گذشتہ جمعرات کو بڑے ملین مارچ میں شریک ہوئے۔ یہ ملین مارچ فلسطینیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے نکالا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں