ریاض،بین الاقوامی سرمایہ کاری کانفرنس میں سرمایہ کاروں اور حکام کی شرکت متوقع

"صحرا میں ڈیووس" کے سلسلے کی کانفرنس میں مستقبل کے سرمایہ کاری اینیشیٹیوز آئیں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی میزبانی میں مستقبل میں سرمایہ کاری سے متعلق انیشی ٹیو ' ایف آئی آئی' کی کانفرس اسی ہفتے ریاض کی اہم ترین سرگرمی بن رہی ہے ۔ کانفرنس ' صحرا میں ڈیووس' کے سلسلے کو ایک کڑی قرار دیا گیا ہے۔سرمایہ کاری کے لیے ڈیووس کی غیر معمولی وابستگی اس امر سے ظاہر ہوتی ہے غزہ پر مسلسل جاری بمباری کے باوجود اپنے شیڈول کے مطابق سعودی دارالحکومت میں کانفرنس کا انعقاد ممکن بنایا جا رہا ہے۔ کانفرنس میں بین الاقامی سطح پر سرمایہ لگانے والی بڑی کمپنیاں اس کانفرنس میں شرکت کریں گی

سعودی عرب کے پی آئی ایف کے گورنر یاسر الرمیان، رے ڈیلیو، لارنس فنک، ڈاکٹر تھامس گوٹسٹین اور ڈیوڈ سولومن مزید پائیدار مستقبل کی تعمیر کے طریقہ کار پر تبادلہ خیال کر رہے ہیں۔ (ایکس)
سعودی عرب کے پی آئی ایف کے گورنر یاسر الرمیان، رے ڈیلیو، لارنس فنک، ڈاکٹر تھامس گوٹسٹین اور ڈیوڈ سولومن مزید پائیدار مستقبل کی تعمیر کے طریقہ کار پر تبادلہ خیال کر رہے ہیں۔ (ایکس)

'ایف آئی آئی ' کے ریاض میں فوکس مصنوعی ذہانت، روبوٹک ایجادات اور استعمال ، تعلیم ، صحت اور پائیداری پر رہے گا ۔ 2017 میں سرمایہ کاروں کو اکٹھے کرنے کے کام شروع کیا گیا تھا۔ جسے حکومتی شعبے کے علاوہ بین الاقوامی سطح موجود نجی شعبہ عملی شکل دے گا۔ کانفرنس میں اس سے پہلے اردن کے شاہ عبداللہ اور سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے سینئیر مشیر جیریڈ کشنر شرکت کر چکے ہیں۔ علاوہ ازیں بلیک راک کے سی ای او لیری فنک اور بھارت سے ریلائینس کے چئیرمین مکیش امبانی شریک ہو چکے ہیں۔

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان ریاض میں فیوچر انویسٹمنٹ انیشیٹو فورم کے دوران خطاب کر رہے ہیں۔ (رائٹرز)
سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان ریاض میں فیوچر انویسٹمنٹ انیشیٹو فورم کے دوران خطاب کر رہے ہیں۔ (رائٹرز)

کانفرنس کے بارے میں بتایا گیا ہے کہ سعودی عرب کے پی آئی ایف کے گورنر یاسر الرمیان، رے ڈیلیو، لارنس فنک، ڈاکٹر تھامس گوٹسٹین اور ڈیوڈ سولومن کانفرنس کو مزید بہتر بنانے پر تبادلہ خیال کر رہے ہیں۔

دوسروں کے علاوہ متعدد پالیسی میکرز ، چیف ایگزیکٹیو آفیسرز اور کمپنیوں کے سربراہان شرکت کریں گے۔ منتظمین کی طرف سے فراہم کردہ معلومات کے مطابق مجموعی طور پر 50000 لوگ اس میں شرکت کریں گے جبکہ 500 لوگ کانفرنس سے خطاب کریں گے ۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں