غزہ آگ کی زد میں، عکا اور خلیج حیفا پر میزائلوں کی برسات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

غزہ کی پٹی میں جاری خونریز جنگ کے سترہویں روز اسرائیل نے پٹی کے مختلف علاقوں پر شدید بمباری کی۔ پٹی کے مغربی علاقے ’’شیخ رضوان‘‘ کالونی پر بمباری کے نتیجے میں درجنوں افراد ہلاک اور زخمی ہوگئے۔ زخمیوں کی ایک بڑی تعداد کو غزہ شہر کے وسطی مغربی علاقے میں الشفا میڈیکل کمپلیکس منتقل کردیا گیا۔ ’’ العربیہ‘‘ کے نمائندے نے بتایا کہ ہسپتال مکمل طور پر زخمیوں سے بھر گیا ہے۔ ہسپتال میں طبی سامان کی شدید قلت ہے۔

العربیہ کے نمائندے نے بتایا کہ امدادی کارکنوں نے زخمیوں کو ملبے کے نیچے سے نکالنے کی کوشش کی۔ زخمیوں میں زیادہ تر بچے ہیں۔ ابتدائی اندازوں کے مطابق شہید اور زخمیوں پر مشتمل متاثرین کی تعداد تقریباً 150 افراد تک پہنچ گئی ہے۔ انہوں نے کہا اسرائیلی حملوں میں ’’تل الھوی‘‘ کالونی میں ایک رہائشی عمارت اور ’’جبالیہ‘‘ میں ایک مکان کو نشانہ بنایا گیا۔

عکا اور حیفا

دوسری جانب القسام بریگیڈز نے اسرائیل کے جنوب میں غزہ کی پٹی میں عسقلان پر میزائلوں سے بمباری کا اعلان کردیا۔ اس دوران مفکعیم کے قریب اسرائیلی فوج کے دو اڈوں ’’ حتسریم‘‘ اور ’’تسیلم‘‘ کو نشانہ بنایا گیا۔ ان دو اڈوں کو دو ڈرونز کے ذریعہ نشانہ بنایا گیا۔

دریں اثنا العربیہ کے نمائندے نے بتایا کہ غزہ کی پٹی کے اطراف کے علاقے ’’نیر عوز‘‘ میں سائرن بجا دئیے گئے۔ اس علاقے میں ڈرون سے حملے کا خطرہ تھا۔ عسقلان اور غزہ کے آس پاس کے قصبوں کی طرف کم از کم بیس راکٹ فائر کئے گئے۔ ان میں سے کچھ راکٹ اسرائیلی دفاعی نظام ’’ آئرن ڈوم‘‘ کو چکمہ دینے میں بھی کامیاب رہے۔

تین راکٹ عسقلان کے جنوب میں گرے۔ راکٹ باری کے باعث غزہ کے اطراف کے علاقوں میں سائرن بجنا شروع ہوگئے۔ العربیہ کے مطابق شمالی اسرائیل میں ’’عکا‘‘ اور ’’خلیج حیفا‘‘ پر بھی راکٹ برسائے گئے۔

اسرائیلی توپخانے کی جانب سے شمالی غزہ میں ’’بیت لاھیا‘‘ اور ’’بیت حانون‘‘ پر پرتشدد بمباری کی گئی۔ متعدد مقامات پر شدید حملے کئے گئے۔ ان حملوں میں ایک ہی دن میں 400 سے زیادہ فلسطینی شہید ہوگئے ہیں۔

اسرائیلی فوج نے اعلان کیا کہ اس نے گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران غزہ کی پٹی میں فلسطینی تنظیموں حماس اور جہاد اسلامی سے تعلق رکھنے والے لگ بھگ 320 اہداف کو نشانہ بنایا ہے۔ صہیونی فوج نے کہا زمینی حملے کی تیاری کے تناظر میں ہماری توجہ اب ان مقامات پر مرکوز ہے جو خطرے کا باعث بن سکتے ہیں۔

اسرائیل نے اتوار کی رات سے غزہ کی پٹی پر اپنے فضائی حملے تیز کر دیے ہیں۔ غزہ کی پٹی میں امدادی سامان کی ترسیل کے بڑھتے مطالبات میں فلسطینی افراد کی شھادتیں بھی بڑھتی جارہی ہیں۔ اسرائیل نے 7 اکتوبر کو شروع ہونے والی جنگ کے بعد پہلے محصور غزہ کی پٹی کی ناکہ بندی مزید سخت کردی ہے اور پانی، بجلی، ایندھن اور خوراک کی سپلائی مکمل طور پر بند کر دی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں