ہمارے پاس کافی طاقت ہے جسے ہم اپنے دفاع میں فہم و فراست سے استعمال کریں گے:السیسی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کے صدر عبدالفتاح السیسی نے بدھ کے روز کہا ہے کہ ان کے ملک نے اپنی پوری تاریخ میں اپنی سرحدوں کو عبور نہیں کیا ہے اور اس کے تمام اہداف اپنی سرحدوں کی حفاظت اور اپنی قومی سلامتی کو محفوظ بنانا ہیں۔

سوئز میں فورتھ آرمرڈ ڈویژن کی جنگی صلاحیت اور تیاریوں کے معائنے کے دوران گفتگو کرتے ہوئے صدر السیسی نے زور دیا کہ مصر تمام بحرانوں سے استدلال اور صبر کے ساتھ نمٹتا ہے تاکہ طاقت کے استعمال کے بغیر مقاصد حاصل کیے جا سکیں۔

ہم اپنے دفاع میں اپنی طاقت کو فہم و فراست کے ساتھ استعمال کریں گے۔

یہ بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب مصر کی شمال مشرقی سرحد پر واقع غزہ کی پٹی ایک شدید فوجی مہم اور اسرائیل اور فلسطینی دھڑوں کے درمیان لڑائی کا مرکز بنی ہوئی ہے۔

7 اکتوبر کو فلسطینی دھڑوں کے جنگجوؤں کے غزہ کے اطراف میں اسرائیلی بستیوں پر اچانک حملے کے بعد شروع ہونے والی لڑائی میں اب تک ہزاروں فلسطینی شہید ہوچکے ہیں۔

مصری صدر نے غزہ کی صورت حال پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ "ہم غزہ میں جاری کشیدگی پر قابو پانے اور کسی نہ کسی شکل میں جنگ بندی تک پہنچنے میں مثبت کردار ادا کر رہے ہیں"۔ انہوں نے کہا کہ مسئلہ فلسطین کا حل سفارتی ذرائع سے ممکن اور ہم تنازع فلسطین کے دو ریاستی حل کی حمایت جاری رکھیں گے۔

اسی تقریب میں، مصری تھرڈ فیلڈ آرمی کے کمانڈر میجر جنرل اسٹاف شریف جودا العرایشی نے کہا کہ مصری فوج اپنی ذمہ داریوں کے دائرہ کار میں کام کرنے کے لیے تیار ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ "ہم اپنی ذمہ داری کے دائرہ کار کے اندر یا کسی اور جگہ جس پر ہمیں لانچ کرنے کے لیے تفویض کیا گیا ہے اس کے لیے تیار ہیں"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں