زمینی افواج نے غزہ پر ’نسبتاً بڑی‘ دراندازی کی: اسرائیلی فوجی ریڈیو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ میں اسرائیلی فوج اپنی اب تک کی سب سے بڑی زمینی کارروائی کے بعد واپس اسرائیلی علاقے میں چلی گئی۔ یہ کارروائی جمعرات کی صبح تک جاری رہی۔ جس سے متعلق ویڈیوز میں اسرائیلی ٹینکوں کو صحرائی علاقے سے گذرتے اور ایک ٹینک کو ایک ٹیلہ ہموار کرتے دکھایا گیا ہے۔

اسرائیلی فوج کے ترجمان کے مطابق سات اکتوبر سے جاری جنگ میں اسرائیل کی غزہ میں یہ سب سے اہم اور بڑی زمینی مداخلت تھی۔ اس زمینی فوج کی در اندازی اسرائیل نے اتوار کے روز جنگ کا تیسرا ہفتہ شروع ہونے پر کی تھی۔

کئی دنوں کی اسرائیلی دھمکیاں اور تیاریاں جاری ہیں۔ گذشتہ روز اسرائیلی وزیر اعظم نے غزہ پر زمینی حملے کے حوالے سے بتایا تھا کہ اس کی تیاری جاری ہے تاہم تفصیلات نہیں بتائی جا سکتی ہیِ دوسری جانب اسرائیل نے اپنی فضائیہ کے ذریعے غزہ پر بمباری میں بھی پہلے سے شدت پیدا کر دی ہے۔

جمعرات کے روز اسرائیلی فوج کے زمینی حملے کے حوالے سے بنائی گئی ویڈیوز میں دکھایا گیا ہے کہ ٹینک گولے پھینک رہے ہیں اور تباہ شدہ عمارات کے باعث خالی علاقے کے نزدیک دھماکے ہو رہے ہیں۔

اپنی اس اب تک کی سب سے بڑی زمینی کارروائی کے بارے میں اسرائیلی فوج نے ایک بیان بھی جاری کیا ہے۔ جس میں کہا گیا ہے' یہ در اندازی اگلے مرحلے کی لڑائی کی تیاری کے سلسلے میں تھی۔ ' تاہم اس بارے میں ابھی تک حماس کی طرف سے کچھ نہیں کہا گیا ہے۔
بیان کے مطابق 'اسرائیلی فوجی غزہ سے واپس اسرائیل آ کر پر جذباتی ہیں اورشادمانی سے سرشار ہیں۔ ' یاد رہے اسرائیل نے ایک سے زائد بار حماس کو تباہ کرنے کے لیے اپنی زمینی کارروائی کی دھمکی دے رکھی ہے

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں