اسرائیل کا لبنانی سرحدکےساتھ فاسفورس بموں سے حملہ،سرحدی علاقوں میں دیرتک آگ بھڑکی رہی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسرائیل کی طرف سے لبنانی سرحد کے نزدیک فاسفورس بموں سے کیے گئے حملوں کے باعث آگ بھڑک اٹھی۔ یہ آگ بدھ اور جمعرات کی درمیان رات کے حملوں سے بڑھکی جو بعد ازاں قریبی دیہات کے آس پاس بھی پھیل گئی۔

اسرائیل کی جانب سے یہ حملہ لبنان کی جنوبی سرحد پر کیا گیا۔ مقامی حکام کے مطابق لبنان کے سرحدی علاقوں میں اسرائیل اور حزب اللہ کے درمیان تصادم اور فائرنگ کا تبادلہ معمول بنتا جا رہا ہے۔

غزہ پر اسرائیلی بمباری کے آغاز کے بعد سے حزب اللہ اور اسرائیل کا یہ تصادم لبنانی کی جنوبی سرحد پر دیکھا جا رہا ہے۔

سرحدی گاوں المہ الشعب کے مئیر جین غفاری کے مطابق ' علاقے میں آگ کے شعلے بدھ کو دیر سے کیے گئے اسرائیلی حملے کے بعد بھڑکے۔ بعد ازاں یہ شعلے گاوں کے کناروں تک پہنچ گئے، جو جمعرات کے دن تک بھڑکتے رہے۔

ایک بین الاقوامی خبر رساں ادارے کی رپورٹس کے مطابق یہ آگ گاوں میں مکانوں تک پہنچ گئی تھی ۔'

مئیر جین غفاری نے مزید کہا 'لبنانی سیکورٹی فورسز اور رضاکاروں کے علاوہ اقوم متحدہ کے امن فوجیوں نے یہ بھڑکی ہوئی آگ بجھانے کی کوشش میں حصہ لیا۔ تاہم تیز ہوا کے چلنے کیوجہ سے انہیں آگ بجھانے میں مشکل پیش آئی۔' گاوں کے بلدیاتی دفتر کے مطابق بار بار کے اسرائیلی حملوں کی وجہ سے المہ الشعب نامی گاوں کی 70 فیصد آباد گاوں چھوڑ کر جا چکی ہے۔'

میڈیا سے وابستہ فوٹوگرافرز نے آگ کو گاوں میں زیتون کے پودوں کو جلاتے دیکھا اور مکانات کے بھی قریب تر یہ آگ نظر آئی۔ لبنانی حملوں سے آگ بھڑکنے کا یہ واقعہ ساحلی شہر نقورہ اور گاوں الم شعب کے درمیان پھیلا ہوا تھا۔

نقورہ کے مئیر عباس عوادہ نے اس بارے میں بات کرتے ہوئے رات کے وقت اسرائیلی حملوں میں فاسفورس بم استعمال کیے گئے۔ یہ آگ تیز ہوا کی وجہ سے تیزی سے پھیل گئی۔'

لبنان کے سرکاری خبر رساں ادارے نے لبنانی طبی عملے کے ذرائع سے انہی دنوں میں رپورٹ کیا ہے کہ سفید فاسفورس سے زخمی ہونےوالے مریض سرحدی علاقوں سے ہسپتالوں میں پہنچے ہیں۔

دوسری جانب انسانی حقوق کے لیے عالمی سطح پر کام کرنے والے ادارے 'ہیومن رائٹس واچ' نے بھی اس امر کی تصدیق کی ہے کہ اسرائیل حماس اور لبنان کے سرحدی علاقوں میں حزب اللہ کے خلاف آگ بھڑکانے والے بارودی ہتھیار استعمال کر رہا ہے۔ '

تاہم اسرائیل ان الزامات کی تردید کرتا ہے۔ ادھر لبنانی پارلیمنٹ کے سپیکر نبیہ بیری نے جمعرات کے روز اسرائیل کی طرف سے سرحدی علاقوں میں فاسفورس بموں کے استعمال کی مذمت کی ہے۔ا

۱نہوں نے اس سلسلے میں بین الاقوامی برادری پر بھی الزام لگایا کہ اسرائیل کی مدد کرنے والے ملکوں نے اسرائیل کو آگ بھڑکانے والے کیمیکل اور ہتھیار استعمال کرنے کی اجازت دے رکھی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں