جنین پر اسرائیلی فوج کا دھاوا، فلسطینی مزاحمت کاروں سے شدید جھڑپیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

جمعرات کی شام غزہ کی پٹی میں اسرائیلی فوج کی طرف سے محدود دراندازی کے موقع پر اسرائیلی فوجی گاڑیوں نے مغربی کنارے کے شہر جنین پر دھاوا بول دیا۔

پرتشدد جھڑپیں

غزہ کے مقامی ذرائع نے جمعہ کی صبح کو اطلاع دی کہ فلسطینی عسکریت پسندوں کے ساتھ پرتشدد جھڑپوں کے دوران کئی اسرائیلی فوجی گاڑیاں جنین شہر اور اس کے کیمپ میں داخل ہوئیں۔

فلسطینی خبر رساں ایجنسی کے مطابق اسرائیلی فورسز نے جنین شہر پر 40 سے زائد گاڑیوں سے ساتھ دھاوا بول دیا۔

ذرائع نے بتایا کہ ابن سینا ہسپتال اور کیمپ کے آس پاس اسرائیلی فوجیں تعینات ہیں۔

انہوں نے اس بات کی بھی نشاندہی کی کہ اسرائیلی فوج کے سنائپرز جنین میں عمارتوں پر تعینات ہیں جب کہ قابض فوج نے جنگی ہیلی کاپٹروں کو طلب کیا جنہوں نے علاقے میں بمباری کی ہے۔

شہر اور اس کے کیمپ میں سائرن بجتے سنائی دیے جبکہ اسرائیلی فورسز نے وہاں کی متعدد عمارتوں اور گھروں پر قبضہ کر رکھا تھا۔

یہ پیش رفت اس وقت سامنے آئی جب اسرائیلی فوج نے جمعرات کی شام زمینی کارروائی کی تیاری کے سلسلے میں غزہ میں محدود دراندازی کی۔

دراندازی کے دوران قابض فوج غزہ شہر کے مشرقی علاقے میں دسیوں میٹر تک اندر داخل ہوئی۔

خیال رہے کہ گذشتہ سات اکتوبر سے فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی پراسرائیل کےفضائی حملے جاری ہیں جن میں اب تک سات ہزار سے زائد فلسطینی شہید اور سترہ ہزار سے زاید زخمی ہوچکےہیں۔

سات اکتوبرکو یہ لڑائی اس وقت شروع ہوئی تھی جب حماس نے سرحدی باڑ عبور کرکے اسرائیلی بستیوں پریلغار کردی تھی۔ حماس کے حملے میں ڈیڑھ ہزار کے قریب اسرائیلی ہلاک اور سیکڑوں کو یرغمال بنا لیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں