حماس اپنی سرنگوں میں روشنی کا انتظام کیسے کرتی ہے؟ غزہ میں ایندھن موجود ہے: اسرائیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ کی پٹی میں ایندھن کو داخل کرنے کی اجازت دینے کے لیے بین الاقوامی اور مقامی سطح پر اپیلوں کے باوجود اسرائیل غزہ کو ایندھن کی فراہمی سے انکاری ہے۔ حالانکہ سات اکتوبر کے بعد غزہ کی پٹی کی ناکہ بندی کےساتھ ساتھ شدید بمباری کےنتیجے میں ہسپتالوں میں ایندھن کی شدید قلت ہے۔

زخمی فلسطینیوں کی تعداد میں اضافے اور ہسپتالوں میں بجلی اور ایندھن کی شدید قلت کی وجہ سے ہسپتالوں میں علاج کی سہولت بند ہونے کا خدشہ ہے۔

غزہ میں سرنگوں میں سے ایک (آرکائیو - ایسوسی ایٹڈ پریس)

حماس اپنی سرنگوں کو کیسے روشن کرتی ہے؟

اسرائیلی حکام نے حماس سے بھی مطالبہ کیا کہ وہ غزہ میں اپنی سرنگوں کو روشن کرنے کے بجائے رہائشیوں کو ایندھن فراہم کرے۔

اسرائیلی فوجی ترجمان نے کہا کہ حماس غزہ کے ہسپتالوں کو مزید ایندھن فراہم کر سکتی ہے، جس نے ایک بار پھر تل ابیب کی جانب سے اقوام متحدہ کے اداروں اور انسانی ہمدردی کی تنظیموں کی اپیلوں کے باوجود پٹی میں ایندھن پہنچانے کی اجازت دینے سے انکار کیا۔

ترجمان رچرڈ ہیچٹ نے مزید کہا کہ حماس اپنی سرنگوں کو ہوا دینے کے لیے ایندھن کا استعمال کرتی ہے، جو زیر زمین سینکڑوں میل تک پھیلی ہوئی ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ "اسرائیلی فوج سمجھتی ہے کہ غزہ میں ایندھن موجود ہے۔" انہوں نے کہا کہ "حماس یہ انتخاب کر سکتی ہے کہ آیا اس ایندھن کو اپنے ہسپتالوں کی مدد کے لیے استعمال کرنا ہے یا اپنی فوجی کارروائیوں اور سرنگوں کے لیے استعمال کرنا ہے‘‘۔

وال سٹریٹ جرنل کی طرف سےشائع رپورٹ کے مطابق اسرائیل کا یہ موقف اس وقت سامنے آیا ہے جب گنجان آباد غزہ کی پٹی میں امداد کی ضرورت میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے، خاص طور پر طبی سہولیات کو چلانے والا ایندھن فراہم کرنے کا مطالبہ زور پکڑتا جا رہا ہے۔

بہت سے ماہرین کے مطابق یہ سرنگیں کسی بھی متوقع اسرائیلی حملے کو پسپا کرنے میں نمایاں اور اہم کردار ادا کرتی ہیں۔ یہ حماس کے جنگجوؤں کے لیے لائف لائن بھی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں