7 اکتوبر کے واقعات کے بعد اسرائیل سنبھل نہیں پائے گا: اسماعیل ہنیہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

حماس کے پولیٹیکل بیورو کے سربراہ اسماعیل ھنیہ نے زور دے کر کہا ہے کہ غزہ میں کشیدگی خطے کی صورتحال کو قابو سے باہر کر دے گی۔

اسرائیل کبھی بحال نہیں ہو گا

انہوں نے جمعرات کو فلسطینی میڈیا سے نشر کی گئی ایک تقریر میں کہا کہ اسرائیل 7 اکتوبر کے واقعات کے بعد سنبھل نہیں پائے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ موجودہ کشیدگی کی وجہ سے خطہ ایک گرما گرم موضوع بن گیا ہے۔

انہوں نے غزہ میں امداد لانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ فلسطینیوں پر اسرائیل کے تسلط کا وقت گذر چکا ہے۔

انہوں نے توجہ دلائی کہ "طوفان الاقصیٰ" آپریشن کو جاری و ساری رہنا چاہیے۔

حماس کے لیڈر نے زور دے کر کہا کہ غزہ ٹھیک ہے اور موجودہ جنگ تاریخ کا چہرہ بدل دے گی۔

اس کے علاوہ ہنیہ نے تمام ممالک سے غزہ پر حملے کو روکنے کے لیے تمام ضروری دباؤ ڈالنے کا مطالبہ کیا۔

ایک ناقابل بیان جارحیت

اسماعیل ھنیہ کا یہ بیان اسرائیلی افواج کی جانب سے غزہ کی پٹی میں محدود دراندازی کے بعد سامنے آیا جب کہ اسرائیل کی طرف سے شدید بمباری جاری ہے۔

دوسری جانب حماس نے اس عزم کا اظہار کیا کہ اگر اسرائیل نےغزہ کی پٹی پر زمینی حملہ کیا تو تل ابیب اس کی بھاری قیمت چکائے گا۔ غزہ کی پٹی میں تحریک کے ترجمان نے پیر کے روز اعلان کیا کہ اگر اسرائیل زمین میں داخل ہوتا ہے تو اسے نقابل تلافی نقصان ہوگا جہاں موت اور گرفتاری اس کا مقدر ہوگا۔

غزہ کی پٹی پر تین ہفتے سے اسرائیلی حملے جاری ہیں۔حماس اور دیگر فلسطینی دھڑوں کے حملے کے بعد سے 2700 سے زائد بچوں سمیت 6500 سے زائد فلسطینیوں کی جانیں جا چکی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں