مشرق وسطیٰ

اسرائیل پر حماس کے سات اکتوبر حملے کا نشانہ بننے والے غیر ملکیوں کے ناموں کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
6 منٹس read

فلسطین کی اسلامی تحریک مزاحمت [حماس] کی جانب سے سات اکتوبر کو اسرائیل پر بڑے حملے کے بعد متعدد غیر ملکی ہلاک ہوئے، یرغمال بنائے گئے یا لاپتا قرار دے دیئے گئے۔

اسرائیلی حکام نے کہا ہے کہ غزہ سے شروع کیے گئے حملوں میں 1,400 سے زیادہ افراد ہلاک ہوئے جن میں زیادہ تر عام شہری تھے۔ ان میں سے کئی لوگوں کو گولی مار دی گئی یا زندہ جلا دیا یا مسخ کر دیا گیا۔

اسرائیل کے مطابق عسکریت پسندوں نے تقریباً 230 افراد کو یرغمال بھی بنا لیا ہے جن میں اسرائیلی، غیر ملکی اور دوہری شہریت کے حامل افراد شامل ہیں۔ اس کے بعد سے چار خواتین کو رہا کیا گیا ہے۔

26 اکتوبر کو حماس کے مسلح ونگ نے کہا کہ "تقریباً 50" یرغمال اسرائیلی افراد اسرائیل کی بمباری میں ہلاک ہو گئے تھے۔ اسرائیلی حکام نے اس اعداد وشمار کی تصدیق نہیں کی ہے جن کی اے ایف پی آزادانہ طور پر توثیق نہیں کر سکا ہے۔

غزہ کی وزارتِ صحت نے 27 اکتوبر کو کہا کہ غزہ میں 7,300 سے زیادہ فلسطینی اسرائیلی بمباری میں ہلاک ہو چکے ہیں جو زیادہ تر عام شہری تھے اور جن میں 3000 سے زیادہ بچے شامل تھے۔

اے ایف پی کے ایک شمار کے مطابق حماس کے حملے میں 200 سے زائد غیر ملکیوں کی ہلاکت کی تصدیق ان کے متعلقہ ممالک نے کر دی ہے جن میں سے اکثر دوہری شہریت کے حامل تھے۔

فرانس، تھائی لینڈ، ریاست ہائے متحدہ امریکہ: سب سے بڑی تعداد

فرانسیسی وزارتِ خارجہ کے مطابق پینتیس فرانسیسی شہری ہلاک ہوئے اور نو کو یرغمال بنایا گیا یا لاپتہ کے طور پر درج کیا گیا۔ یرغمالیوں میں ایک نوجوان خاتون میا شیم بھی شامل ہے جو حماس کی جانب سے 16 اکتوبر کو جاری کردہ ایک ویڈیو میں نظر آئی تھی۔

بنکاک حکومت کے مطابق 33 تھائی باشندے ہلاک اور 18 اغوا ہوئے۔ اسرائیل میں تقریباً 30,000 تھائی باشندے کام کرتے ہیں بالخصوص کاشتکاری کے شعبے میں۔

وائٹ ہاؤس کے مطابق اکتیس امریکیوں کی موت واقع ہو گئی اور 13 کو لاپتہ کے طور پر درج کیا گیا ہے۔ صدر جو بائیڈن نے کہا ہے کہ یرغمالیوں میں امریکی بھی شامل ہیں۔ جمعہ کو ایک امریکی خاتون اور اس کی بیٹی کو رہا کر دیا گیا۔

روس، یوکرین

کیف حکام کے مطابق اکیس یوکرینی باشندے ہلاک ہو گئے۔ ایک یوکرینی کو لاپتہ کے طور پر درج کیا گیا ہے۔

انیس روسی-اسرائیلی ہلاک اور دو دیگر حماس کے ہاتھوں یرغمال ہیں۔ سات روسی لاپتہ ہیں۔

دنیا کے ہر گوشے سے متأثرین

برطانوی حکومت کے مطابق کم از کم 12 برطانوی ہلاک ہو گئے اور پانچ کو لاپتہ کے طور پر درج کیا گیا ہے۔ متاثرین میں 13 سالہ یاہیل شرابی بھی شامل ہیں جو ان کے خاندان کے مطابق اپنی ماں لیان اور 16 سالہ بڑی بہن نویا کے ساتھ ہلاک ہو گئے تھے۔ ان کے والد ایلی تاحال لاپتا ہیں۔

تل ابیب میں ملک کے سفارت خانے کے مطابق دس نیپالی مارے گئے۔ دیگر سے رابطہ منقطع ہے۔ حکام کہا ہے کہ 10 سے بھی کم جرمن ہلاک ہوئے جبکہ دس سے زائد یرغمالیوں کی اطلاع ہے۔

نو ارجنٹینی باشندے ہلاک ہو گئے اور 21 لاپتہ ہیں یا یرغمال بنائے گئے جن میں دو بھائی لائیر اور ایٹن ہارن بھی ان کے والد کے مطابق شامل ہیں۔ اور ایک نو ماہ کا بچہ بھی ہے۔

ملک کی حکومت کے مطابق چھ کینیڈین بھی ہلاک ہوئے ہیں۔ اس کے علاوہ ایک شخص جس کا "کینیڈا سے گہرا تعلق" تھا اور دو تاحال لاپتہ ہیں۔

ایک فوجی سمیت پانچ رومانیائی باشندے ہلاک ہو گئے جو اسرائیلی شہریت کے بھی حامل تھے اور ایک کو حماس نے اغوا کر لیا ہے۔ دوہری شہریت کے حامل چار پرتگالی ہلاک ہو گئے اور چار لاپتہ کے طور پر درج ہیں۔

چار چینی مر گئے اور دو لاپتا ہیں

چار فلپائنی مر گئے جن میں ایک 33 سالہ خاتون اور ایک 42 سالہ مرد پر ایک کبٹز پر حملہ ہوا اور ایک 49 سالہ خاتون جو ایک الیکٹرانک میوزک فیسٹیول میں شریک تھی۔ دو فلپائنی باشندوں کو لاپتہ بھی قرار دیا گیا ہے۔ دوہری اسرائیلی شہریت کے حامل چار آسٹرین ہلاک ہوئے اور ایک لاپتہ ہے۔

روم میں حکومت کے مطابق دوہری شہریت کے حامل تین اطالوی مر گئے جن میں ساٹھ سال سے زائد عمر کا ایک جوڑا اور ایک 29 سالہ نوجوان شامل تھا جو حماس کے حملے کے دوران ایک میوزک فیسٹیول میں شریک تھے۔ بیلاروس کے تین شہری مر گئے اور ایک لاپتا ہے۔

دوہری اسرائیلی شہریت کے حامل ایک برازیلی جوڑے کے ساتھ ساتھ ایک اور برازیلین خاتون کی موت ہو گئی جبکہ برازیلی-اسرائیلی دہری شہریت کے حامل 59 سالہ مائیکل نیسنبام کی گمشدگی کی اطلاع ہے۔

پیرو کے تین باشندے مارے گئے۔ دو جنوبی افریقی شہری بھی مارے گئے۔ چلی، ترکی، اسپین اور کولمبیا سبھی نے اپنے ایک شہری کی موت اور دوسرے کی گمشدگی کا اعلان کیا۔

اسرائیل میں سری لنکا کے سفیر نے جمعے کو اپنے ایک شہری کی موت کا اعلان کیا اور کہا کہ دوسرا لاپتہ تھا جس کی موت کا یقین ہے۔

کمبوڈیا، آسٹریلیا، ہونڈوراس، آذربائیجان، آئرلینڈ اور سوئٹزرلینڈ میں سے ہر ایک نے کہا کہ ان کے ایک شہری کی موت واقع ہوئی۔

یرغمالی افراد

یرغمالیوں میں دو کم سن بچوں سمیت چار اسرائیلی-ہنگری باشندے بھی شامل ہیں۔ دوہری اسرائیلی شہریت کے حامل 30 سالہ میکسیکن اور 32 سالہ فرانکو میکسیکن بھی زیرِ حراست ہیں۔

نیدرلینڈز نے کہا کہ بیری کبٹز میں اغوا کیا گیا ایک 18 سالہ نوجوان یرغمال تھا جبکہ یوراگوئے نے تصدیق کی کہ اس کا ایک شہری نیر اوز کبٹز میں اغوا کیا گیا تھا جو اسرائیلی شہریت بھی رکھتا ہے۔ سرکاری ذرائع کے مطابق پیراگوئے اور تنزانیہ کے دو دو باشندے بھی یرغمال بنائے گئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں