خاتون فوجی کو رہا کرالیا: اسرائیل، حماس نے تردید کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے حماس کے ہاتھوں یرغمال اپنی ایک خاتون فوجی کو رہا کرانے کا اعلان کردیا، دوسری طرف حماس نے اسرائیلی دعوے کی تردید کردی۔

صہیونی فوج پیر کے روز ایک بیان میں کہا کہ گزشتہ رات خاتون سپاہی ’’اوری میگیدیش‘‘ کو غزہ کی پٹی میں فوج کی جانب سے کیے گئے زمینی آپریشن کے دوران رہا کرایا گیا

فوج نے کہا کہ حماس کے بندوق برداروں نے 7 اکتوبر کو خاتون فوجی ’’اوری میگیدیش‘‘ کو اغوا کیا تھا۔ حماس کے زیر حراست یرغمالیوں کی رہائی کے لیے کام جاری رکھا جائے گا۔

اسرائیلی فوج اور داخلی سلامتی ایجنسی ’’ شاباک‘‘ کے ایک مشترکہ بیان میں کہا گیا خاتون فوجی کو آج "آزاد" کر لیا گیا۔ خاتون فوجی کا طبی معائنہ کیا گیا اور وہ اچھی حالت میں ہے۔ خاتون فوجی نے خاندان سے ملاقات کی ہے۔

حماس کے سیاسی بیورو کے ایک رکن عزت الرشق نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا اس طرح کے اعلان کا مقصد خواتین قیدیوں کی ویڈیو کو متاثر کرنا ہے جسے القسام نے آج نشر کیا ہے۔ یہ الزامات وزیراعظم نیتن یاہو اور ان کی حکومت پر اس دباؤ سے بچنے کی کوشش ہیں جس کی نمائندگی قابض قیدی کر رہے ہیں۔

پیر کو ہی القسام بریگیڈز نے نیتن یاہو کو مخاطب کرتی اسرائیلی یرغمالی تین خواتین کی ویڈیو جاری کی تھی۔ 76 سیکنڈ کے کلپ میں تین خواتین کو پلاسٹک کی کرسیوں پر بیٹھا دکھایا گیا ہے۔ان میں سے صرف ایک نے بات کی اور وہ غصے میں دکھائی دی۔ اس نے زور دار آواز میں نیتن یاہو سے یرغمالیوں کو آزاد کرانے کا مطالبہ کیا۔ خاتون نے کہا ہم آپ کی سیاسی، سکیورٹی اور فوجی ناکامی کے باعث یرغمال ہیں۔ سات اکتوبر کو کوئی فوجی بھی نہیں پہنچا تھا۔ خاتون نے کہا " ہمیں ابھی آزاد کراؤ ‘‘

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں