فلسطین اسرائیل تنازع

حماس نے 400 کلومیٹرلمبی سرنگیں بنارکھی ہیں, گاڑیاں اور موٹرسائیکل بھی چل سکتے ہیں

زمینی حملہ اسرائیل کو ذلت آمیز شکست سے دوچار ہوگی:چیف آف سٹاف ایران

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ کے شمالی حصے میں حماس نے 400 کلومیٹر لمبی زیر زمین سرنگیں کھود رکھی ہیں۔ حماس کے زیر استعمال سرنگوں کی اس تعداد کا انکشاف ایرانی فوج کے چیف آف سٹاف جنرل محمد باقری نے کیا ہے۔ایرانی چیف آف سٹاف نے حماس کی طویل تر زیر زمین سرنگوں کے حوالے سے اسرائیل کو انتباہ کیا ہے کہ اس کے باوجود اس نے غزہ پر زمینی حملہ کیا تو اسے شرمناک شکست دیکھنا پڑے گی۔'

ایران کے نیم سرکاری ادارے ' تسنیم ' نے بتایا گیا ہے کہ حماس کے مزاحمتی کارکنوں نے ان طویل زیر زمین سرنگوں میں کئی حصے ایسے بھی بنا رکھے ہیں جن کے اندر موٹر سائیکل اور گاڑیاں تک چلائی جا سکتی ہیں۔ '

مزید بتایا گیا ہے کہ ان سرنگوں میں داخل ہونے کا راستہ غزہ سے ہے جبکہ ان کے راستے اخراج اسرائیل کی رکاوٹی دیوار اور اسرائیل کے اندر تک موجود ہیں۔

جنرل باقری نے یہ دعویٰ بھی کیا ہے کہ اسرائیلی فوج نے غزہ پر حملہ اسی وجہ سے اب اس نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ کہ اسے سرنگوں کے بارے میں ایک خوف کا سامنا ہے۔

دوسری جانب اسرائیلی فوج کے ترجمان رئیر ایڈمرل ڈینیل ہگاری نے پیر کے روز کہا تھا کہ اسرائیل کےمزید فوجی غزہ میں داخل ہو چکے ہیں۔ فوج نے غزہ میں اپنی جنگ کا دائرہ بڑھا دیا ہے۔ زمینی حملہ وسیع کیا جا رہا ہے۔ فوج دہشت گردوں کی طرف بڑھ رہی ہے۔ '

اسرائیلی فوجی ترجمان نے یہ بھی کہہ دیا کہ دہشت گرد میدان میں کھڑے ہیں اور ہم ان پر اوپر سے بمباری کر رہے ہیں۔ '

آسٹریلیا کے 'سٹریٹجک پالیسی انسٹیٹیوٹ تھنک ٹینک ' نے اسی ماہ رپورٹ کیا ہے کہ 'حماس نے زیر زمین سرنگیں بیس برسوں کے دوران تیار کی ہیں۔ حماس نے اس تعمیراتی عمل کو 2007 میں اسوقت تیز کر دیا تھا جب اسرائیل نے غزہ کا محاصرہ کیا تھا۔'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں