غزہ کے حامیوں پر غصے میں حملہ آور اسرائیل نواز دوشیزہ کی ویڈیو وائرل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اپنی نوعیت کے انوکھے واقعے میں اسرائیل نواز ایک دوشیزہ نے غزہ کے لیے لندن میں امدادی اپیل کے لیفلٹس تقسیم کرنے والوں پر حملہ کر دیا۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والے ایک ویڈیو کلپ جس میں لوگوں کو غزہ کی پٹی کے لوگوں کی حمایت میں راہگیروں میں لیفلٹس تقسیم کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے، جو تین ہفتوں سے زائد عرصے سے اسرائیلی بمباری کی زد اور محاصرے میں ہیں، اچانک ایک عورت ان پر حملہ آور ہوئی اور غصے میں چلاتے ہوئے انھیں طعنے دینے لگتی ہے۔

تقسیم کاروں نے اس سے بچنے کی کوشش کی تو وہ دوبارہ ان پر چیخنے، ان پر حملہ کرنے اور مارنے کے لیے لپکتی رہی، یہاں تک کہ ان لوگوں میں سے ایک نے اپنا فون نکال کر اس واقعے کی فلم بندی شروع کر دی۔

ایک بے مثال مظاہرہ

یہ قابل ذکر واقعہ منگل کے روز پیش آیا جہاں اسرائیل کی جانب سے وہاں کے باشندوں کے خلاف شروع کی گئی جنگ کے خلاف برطانوی دارالحکومت لندن کی سڑکوں پر بے مثال مظاہرہ کیا گیا تھا، جس میں ہزاروں افراد نے فلسطینیوں کی حمایت کے لیے شرکت کی تھی۔

برطانوی پولیس کے مطابق غزہ میں جنگ بندی کے مطالبے کے لیے ہونے والے مظاہرے میں تقریباً ایک لاکھ افراد نے شرکت کی اور دوسرے شہروں جیسے مانچسٹر اور گلاسگو میں بھی مارچ کا انعقاد ہوا ہے۔

مظاہرین نے گورنمنٹ سٹریٹ، وائٹ ہال پر فلسطینی پرچم بھی اٹھا رکھے تھے اور فلسطین کی حمایت میں نعرے بھی لگائے۔

اس کے علاوہ کئی عرب اور یورپی شہروں اور دارالحکومتوں کے ساتھ ساتھ ریاستہائے متحدہ امریکہ میں بھی کئی ہفتوں سے فلسطینیوں کی حمایت اور اسرائیلی بمباری کی مذمت کے لیے مظاہرے ہو رہے ہیں۔

یاد رہے سات اکتوبر کو حماس نے ایک غیر معمولی حملہ کیا تھا، جس کے دوران اس کے لوگوں نے محصور غزہ کی پٹی کی سرحدی باڑ عبور کر کے اسرائیلی فوجی اڈوں میں گھس کر غزہ کی پٹی پر سرحدی بستیوں پر حملہ کیا تھا، جس میں 1400 سے زائد افراد ہلاک ہوئے تھے، جن میں زیادہ تر عام شہری تھے، اور 240 کو یرغمال بنا لیا تھا۔

اس واقعے کے بعد اسرائیل نے اپنی زمینی کارروائیوں کا دائرہ وسیع کیا اور غزہ کی گنجان آباد پٹی پر حملے تیز کر دیے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں